انٹرنیشنل

بھارت اور چین کے درمیان نیا جنگی محاذ چھڑنے کی وجوہات دینا کے سامنے آگئیں

بھارت شمال مشرقی ہمالیائی ریاست اروناچل پردیش میں 12 پن بجلی گھروں کی تعمیر میں تیزی لانے کے لیے ایک ارب ڈالر خرچ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے

چین (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت اور چین کے درمیان نیا جنگی محاذ چھڑنے کی اصل وجوہات کیا ہیں؟ اس حوالے سے تمام تر سچائی سامنے آنے کے بعد پوری دنیا حیران و دنگ رہ گئی ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق بھارت شمال مشرقی ہمالیائی ریاست اروناچل پردیش میں 12 پن بجلی گھروں کی تعمیر میں تیزی لانے کے لیے ایک ارب ڈالر خرچ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ اس علاقے پر چین بھی اپنا دعوی کرتا ہے بھارت کے اس اقدام سے دونوں ملکوں میں پہلے سے موجود کشیدگی میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے۔میڈیا ذرائع کے مطابق اس معاملے کے بارے میں براہ راست معلومات رکھنے والے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس منصوبے کے تحت اروناپرچل پردیش کے پن بجلی کے منصوبوں کے لیے تقریبا 90 ارب روپے مختص کیے جانے کا امکان ہے۔ وفاقی وزارت خزانہ نے حال ہی میں شمال مشرقی علاقے میں ہر پن بجلی گھر کے لیے ساڑھے سات ارب رپوں تک کی مالی امداد کی منظوری دی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پن بجلی گھروں کے اس منصوبوں کا اعلان مالی سال برائے 2024۔2025 میں متوقع ہے جس کا اعلان وزیراعظم نریندر مودی کی حکومت 23 جولائی کو کرے گی۔ ذرائع نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ یہ معلومات ابھی خفیہ رکھی گئی ہیں۔ امکان ہے کہ اس منصوبے کے تحت شمال مشرقی ریاستوں کو مالی مدد فراہم کی جائے گی۔ ریاستی حکومتوں کو ریگولیٹری بورڈ پر رکھنے سے مقامی آبادیوں کی بحالی کے پروگراموں اور میزبان ریاست کے ساتھ بجلی کی شیئرنگ کے لیے بات چیت میں تیزی لانے میں مدد ملتی ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button