انٹرنیشنل

تارکین وطن کی کشتی یمن کے ساحل پر ڈوبنے کا معاملہ، 49 لاشیں نکال لی گئیں

رنے والوں میں کم از کم 6 بچے اور 31 خواتین بھی شامل ہیں۔

لاہور(انٹرنیشنل ڈیسک)یمن کے ساحلی علاقے میں ڈوبنے والی تارکین وطن کی کشتی کے 49 افراد کی لاشیں نکال لی گئیں جبکہ 140 مسافر تاحال لاپتا ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق کشتی میں سوار 260 مسافروں میں سے 71 کو بچالیا گیا ہے جن میں سے 8 افراد کو ہسپتال منتقل کیاجا چکا ہے۔ خبر رساں اداروں کے مطابق مرنے والوں میں کم از کم 6 بچے اور 31 خواتین بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ افریقہ سے آنے والے تارکین وطن کی کشتی یمن کے ساحلی علاقے میں ڈوب گئی تھی۔حکام کے مطابق کشتی میں 260 افراد سوار تھے، جن میں سے زیادہ تر ایتھوپیا اور صومالیہ کے شہری تھے، تمام تارکین وطن یمن پہنچنے کی کوشش کررہے تھے۔یمنی حکام نے بتایا کہ تارکین وطن کی کشتی عدن کے مشرق میں شبوا گورنری کے ساحل پر پہنچنے سے پہلے ہی ڈوب گئی تھی۔خبر رساں اداروں کے مطابق ماہی گیروں اور مقامی لوگوں نے 78 تارکین وطن کو ڈوبنے سے بچایاجبکہ کشتی میں سوار مزید 100 کے قریب افراد سمندر میں لاپتا ہوگئے‘ جن کے زندہ ملنے کے امکانات معذوم ہو چکے ہیں۔مقامی حکام کا کہنا ہے کہ ڈوبنے والے دیگر افراد کی تلاش جاری ہے، واقعہ سے متعلق اقوام متحدہ کو بھی مطلع کر دیا گیا ہے۔اقوام متحدہ کے مطابق گزشتہ سال افریقہ سے 97 ہزار تارکین وطن یمن پہنچے تھے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button