انٹرنیشنل

فلسطینیوں کی عید‘اسرائیلی پابندی کے باوجود 40ہزار مسلمانوں کے قبلہ اول میں سجدے

اسرائیلی فورسز نے مسجد اقصیٰ میں عید الاضحیٰ کی نماز پڑھنے کے لیے آنے والے مسلمانوں پر حملہ بھی کیا اور بہت سوں کوتشدد کا نشانہ بھی بنایا

لاہور(انٹرنیشنل ڈیسک) عید کے روز بھی اسرائیلی فوج کی جارحیت جاری رہی۔ بے جا رکاوٹوں اور پابندیوں کے باجود فلسطین کے مسلمان نماز عید ادا کرنے کیلئے سروں پر کفن باندھ کر نکل آئے۔انہوں نے مسجد اقصیٰ میں داخل ہو کر باآواز بلند تکبیرات پڑھیں جس سے فلسطین کی فضا ؤں میں دیر بعد شادمانی اور غم وغصہ کے ملے جلے تاثرات دیکھنے میں آئے۔ 40 ہزار سے زائد فلسطینی اپنے قبلہ اوّل میں داخل ہو گئے اور عید الاضحیٰ کی نماز ادا کرنے میں کامیاب ہوئے۔عالمی خبر رساں ایجنسی وفا کے مطابق اسرائیلی فورسز نے مسجد اقصیٰ میں عید الاضحیٰ کی نماز پڑھنے کے لیے آنے والے مسلمانوں پر حملہ بھی کیا اور بہت سوں کوتشدد کا نشانہ بھی بنایا۔قابض فوج نے مسجد اقصیٰ کے صحن میں توڑ پھوڑبھی کی، نمازیوں کے شناختی کارڈز چیک کرنے کے بہانے ان کو ہراساں کیاگیا۔اس کے علاوہ نمازیوں کی نقل و حرکت میں خلل ڈالا گیا۔

اسرائیلی فوجیوں نے ہزاروں فلسطینیوں کو عید کی نماز مسجد اقصیٰ میں ادا کرنے اور داخل ہونے سے روک دیا جس سے مسلمانوں میں غم وغصے کی لہر دوڑ گئی۔اردن کے زیر انتظام مسجد اقصیٰ کی اسلامی وقف کے انچارج نے بتایا کہ اسرائیلی بندشوں اور ہزاروں افراد کو داخلے سے روکنے کے باوجود 40 ہزار سے زائد فلسطینی نمازِ عید ادا کرنے میں کامیاب ہوگئے۔جن فلسطینی نوجوانوں کو اسرائیلی فوج نے تشدد کا نشانہ بناکر مسجد اقصیٰ سے بے دخل کردیا تھا انہوں نے باہر صفیں بنالیں اور نماز ادا کی۔دوسری جانب غزہ میں فلسطینیوں نے اپنے تباہ شدہ گھروں کے ملبے پر نماز عید ادا کی۔ اس موقع پر غزہ کے غیور مسلمانوں کا جذبہ ایمان دیکھنے کے لائق تھا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button