انٹرنیشنل

مودی حکومت کو پہلا بڑا جھٹکا، کولکتہ کے میئر نے شہریوں کو اسلام قبول کرنے کی کھلی دعوت دیدی

مئیر کوکلتہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے، جبکہ ان کا 2016 کا بیان بھی چلایا جا رہا ہے، جس میں کولکتہ کے مسلمان اکثریتی علاقے کو منی پاکستان قرار دیا تھا

کولکتہ (مانیٹرنگ ڈیسک) مودی حکومت کو پہلا بڑا جھٹکا، بھارتی شہر کولکتہ کے مئیر نے شہریوں کو اسلام قبول کرنے کا مشورہ دے دیا ہے، مئیر کا بیان حکمران جماعت کو ایک آنکھ نہیں بھایا ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق مئیر کوکلتہ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے، جبکہ ان کا 2016 کا بیان بھی چلایا جا رہا ہے، جس میں کولکتہ کے مسلمان اکثریتی علاقے کو منی پاکستان قرار دیا تھا جبکہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے مئیر فرہاد کو بنگال کی وزیر اعلی ممتا بینرجی کا قریبی ساتھی قرار دیا جا رہا ہے۔ بی جے پی بنگال کے رہنما اگنی مترا پول کی جانب سے کہنا تھا کہ مئیر کے بیان نے ہندو مذہب کو توہین کی ہے، ساتھ ہی بھارت میں اتحاد اور بھائی چارگی کو بھی خطرے میں ڈالا ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کا یہ بھی کہنا تھا کہ کوکتہ شہر کے مئیر فرہاد حکیم کی جانب سے آل انڈیا قرآن مقابلے کے دوران خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ غیر مسلم بدقسمت ہیں اور انہیں اپنا ایمان تازہ کرنے کے لیے اسلام قبول کرنا چاہیے۔ مئیر کوکلتہ کے اس بیان پر بی جے پی کی جانب سے شدید مخالفت کی جا رہی ہے، جبکہ مئیر کا کہنا تھا کہ ہمیں غیر مسلمانوں میں اسلام کو پھیلانا چاہیے، اگر ہم کسی کو اسلام کی طرف راغب کرتے ہیں تو ہم ایک سچے مسلمان ثابت ہو سکتے ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button