دلچسپ و عجیب

مہنگے ترین انڈے جن کی قیمت ڈالرزمیں کی جاسکتی ہے

آپ یہ انڈے اپنی زندگی میں غالباً ایک باربھی خریدنےکےمتحمل نہیں ہوسکتے

انڈے بہت سی ڈشزمیں ایک عام جزو کے طورپرشامل ہوتے ہیں، جو لذیزآملیٹ سے لے کرابلی ہوئی کھانے پینے کی اشیا میں شامل کیے جاتے ہیں۔  انڈوں کی ایک قسم ایسی بھی ہے جولوگوں کی قوت خرید سے نہ صرف باہرہے بلکہ وہ خرید ہی نہیں سکتے۔ کیونکہ یہ دنیا کے سب سے مہنگےکھانےکے قابل انڈے ہیں۔

گنیزبک آف ورلڈ ریکارڈ کےمطابق یہ ایرانی قسم کی بیلوگا کیویئرجسےالماس (بحیرہ کیسپئن میں پائی جانےوالی مچھلی کےانڈے) کہا جاتا ہے، اس کی قیمت ساڑھے 34 ہزارامریکی ڈالرزتک ہوتی ہے۔ عام مرغیوں کےانڈوں کی قیمتوں کودیکھا جائے تو امریکا میں کئی عوامل کی بنا پر ایک درجن انڈوں کی قیمت عموماً 2 سے 6 ڈالرز تک ہوتی ہے۔ لیکن دنیا کے مہنگے ترین انڈے اور اس میں کوئی تقابل نہیں ہے۔

یہ اس قدرمہنگے ہوتے ہیں کہ آپ یہ انڈے اپنی زندگی میں غالباً ایک باربھی خریدنےکےمتحمل نہیں ہوسکتے۔ یہ انڈے پولٹری فارم پر نہیں بلکہ کسی فشری سے ہی مل سکتے ہیں۔ اس حوالے سے بیلوگا کیویئرانڈا ایک امتیازی حیثیت کا حامل ہے اور اس کی اوسطاً ایک بار سروس 3 سے 4 ہزار امریکی ڈالرز کے مساوی ہے۔

دوسری جانب برطانیہ کے گورمیٹ فوڈ اسٹورز میں اس کیویئرز کی ایک اونس کی قیمت 10 ڈالرز کے اندر ہوتی ہے۔ قیمتوں میں اس قدر زیادہ فرق کے حوالے سے کیسپین مونروکیو کا کہنا ہے کہ کیویئر کی اقسام جو کافی شاذ و نادر دسیتاب ہیں وہ کافی مہنگی ہیں۔

 ان کے مطابق ساڑھے 34 ہزار ڈالرز والی کیویئرز بحیرہ کیسپئن کی ایک ایسی اسٹورجن اور مادہ مچھلی کی قسم سے تعلق رکھتی ہے جو کہ معدومی کے خطرے سے دوچار ہے اور یہ 18 برس میں صرف ایک بار انڈے دیتی ہے۔

اومامی انسائیڈر آن لائن اسٹور کے مطابق دیگر مچھلیوں کے انڈوں کی اقسام میں جیسے روو، جو سوشی میں مل جاتی ہے اور یہ بہت عام ہے، جبکہ یہ ہیرنگ، سالمن اور اسملیٹ میں بھی مل جاتے ہیں، لیکن بحیرہ کیسپئن کے ایرانی ساحل کی جانب موجود اس مخصوص مچھلی کے انڈے جنہیں الماس کا نام دیا گیا ہے یہ بالکل الگ اور انتہائی ارزاں قسم ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.