دلچسپ و عجیب

600 ای میلز اور کئی درخواستیں مسترد ہونے کے بعد بھی نوجوان کو ورلڈ بینک میں نوکری مل گئی

مستقل مزاجی کا یہ نتیجہ نکلاکہ مئی کے پہلے ہفتے تک مجھے 4 کمپنیوں کی جانب سے نوکری کی پیشکش ہوئی تاہم میں نے ورلڈ بینک کا انتخاب کیا

600 ای میلز اور کئی درخواستیں مسترد ہونے کے بعد بھی نوجوان کو ورلڈ بینک میں نوکری مل گئی ‘ اس نوجوان کا تعلق بھارت سے اور اس کی عمر 23 سال ہے۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بھارت سے تعلق رکھنے والے 23 سالہ وتسل ناہٹا کو 600 ای میلز بھیجنے اورکئی درخواستیں مسترد ہونے کے بعد بالآخر ورلڈ بینک میں نوکری مل گئی۔ بھارتی نوجوان نے اپنی کامیابی کی کہانی ایک سوشل میڈیا پوسٹ میں بیان کی۔ امریکی یونیورسٹی’ Yale’ سے گریجویٹ ہونے والے وتسل کا مقصد تھا کہ وہ ورلڈ بینک میں ملازمت کریں جس کے لیے انہوں نے آرگنائزیشن کو کئی ای میلز بھی بھیجیں پر ہر بار ان کی درخواست مسترد ہوجاتی۔ بھارتی نوجوان کا سفر 2020 میں کورونا کے دوران شروع ہوا جب وہ یونیورسٹی سے گریجویشن مکمل کرنے والیتھے۔عالمی وبا کی وجہ سے زیادہ تر کمپنیاں اپنے ملازمین کو فارغ کررہی تھیں۔

وتسل کے مطابق میرے پاس نوکری نہیں تھی اور میں 2 ماہ میں گریجویٹ ہونے والا تھا، میں اپنے آپ سے بات کررہا تھا کہ اتنی دور آکر پڑھائی کرنے کا کیا فائدہ جب نوکری بھی حاصل نہیں کرپایا لیکن میں نے یہ سوچا ہوا تھا کہ میں بھارت واپس نہیں جاؤں گا اور اپنی پہلی تنخوا مجھے ڈالرز میں ہی چاہیے تاہم میں نے اگلے دو ماہ میں اپنے نیٹ ورک استعمال کرنا شروع کیے اور نوکری حاصل کرنے کے لیے تقریبا 600 سے زائد ای میلز لکھیں اور ہر بار میری درخواست مسترد کی گئی لیکن میں نے ہمت نہیں ہاری اور مسلسل ورلڈ بینک سمیت ہر بڑی کمپنی میں نوکری کی درخواست بھیجتا رہا۔ بالآخر میری مستقل مزاجی کا یہ نتیجہ نکلاکہ مئی کے پہلے ہفتے تک مجھے 4 کمپنیوں کی جانب سے نوکری کی پیشکش ہوئی تاہم میں نے ورلڈ بینک کا انتخاب کیا۔ وتسل کاکہنا ہے کہ مجھے ورلڈ بینک کے موجودہ ڈائریکٹر ریسرچ کے ساتھ مشین لرننگ پیپر پر آتھر شپ کی پیشکش کی گئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ میرا سب کے ساتھ اپنا تجربہ شیئر کرنے کا مقصد لوگوں کی حوصلہ افزائی کرنا ہے کہ وہ کبھی ہار نہ مانیں۔ اگر آپ کسی ایسی ہی چیز سے گزر رہے ہیں جہاں لگتا ہے کہ دنیا آپ کے لیے ختم ہورہی ہے تو آپ پھر بھی محنت جاری رکھیں اور اگر آپ اپنی غلطیوں سے سیکھ رہے ہیں تو بہتر دن ضرور آئیں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.