صحت

کون سا وٹامن کس وقت کھایا جاسکتا ہے؟

وٹامنز انسانی جسم میں جا کرمختلف اوقات میں مختلف طریقوں سےافادیت پہنچاتے ہیں

وٹامنز اورمنرلزانسانی جسم کےلیےبنیادی اجزا کی حثیت رکھتےہیں، وٹامنزکی متوازن مقدار قوت مدافعت مضبوط بنا کر متعدد بیماریوں، وائرل اور موسمی انفیکشنز سےبچاتی ہے، وٹامنز سےحاصل ہونے والےفوائد کو مؤثر بنانےکےلیےکونسا وٹامن کس وقت لینا چاہیےیہ جاننا بھی نہایت ضروری ہے ۔

طبی ماہرین کےمطابق وٹامنز انسانی جسم میں جا کرمختلف اوقات میں مختلف طریقوں سےافادیت پہنچاتےہیں، کچھ وٹامنز کھانےسےقبل، کھانےکےبعد، نہار منہ یا کھانےکےدوران لیےجاتےہیں، ہروٹامن کا انسانی جسم مین اثر انداز ہونےکا اپنا ایک طریقہ ہوتا ہے،سپلیمنٹس کے طورپرلیےجانےوالےوٹامنز میں کچھ ملٹی یعنی ایک کیپسول میں ایک سےزائد وٹامنز پائےجاتےہیں جبکہ کچھ وٹامنز واحد ہوتےہیں جنہیں مختلف اوقات میں لینا زیادہ سود مند ثابت ہوتا ہے۔

ملٹی وٹامنز لینے کا صحیح وقت

ملٹی وٹامنزکےکیپسول میں کیلشیم ،آئرن،فولک ایسڈ، وٹامن اے،بی کی مخلتف اقسام،سی،ای، ڈی اور زنک پایا جاتا ہے۔ ماہرین کےمطابق آئرن خالی پیٹ زیادہ جلدی ہضم اورمؤثر ثابت ہوتا ہے، اگر آئرن لینےسےقبل ڈیری مصنوعات کا استعمال کیا جائےتوآئرن کی افادیت کم ہو جاتی ہےاور ہضم ہونےمیں وقت زیادہ لگتا ہے،آئرن کا استعمال نارنجی یا وٹامن سی سےبھرپورکسی بھی پھل کےجوس کےساتھ کرنا زیادہ بہترثابت ہوتا ہے۔

طبی وغذائی ماہرین کےمطابق ملٹی وٹامنز کھانےکا صحیح وقت دوپہرکےکھانےکےدوران ہے، دوپہرکےکھانے سے قبل وٹامن کا کیپسول کھائیں اور کھانا کھا لیں، یہ ان ملٹی وٹامنز کو ہضم اور ان کے مکمل فوائد حاصل کرنے کا یہ صحیح وقت ہے۔

ملٹی وٹامنز ہمیشہ بڑا گلاس بھر کر پانی کے ساتھ لینا چاہیے۔

صبح کے آغاز میں وٹامنز کا استعمال کرنا یا بغیر کھانا کھائے لینا انسان کو بیمار کر سکتا ہے، رات سونے سے قبل انہیں کھایا جا سکتا ہے، ملٹی وٹامنز سے بھرپور فائدہ اٹھانے کے لیے انہیں بغیرناغہ روزانہ کھانا چاہیے۔

فولک ایسڈ کا استعمال

فولک ایسڈ کا استعمال حاملہ خواتین کے لیے نہایت ضروری ہے، ماہرین کے مطابق حمل سے ایک سال قبل فولک ایسڈ کا استعمال شروع کر دینا چاہیے۔

فیٹ سلیوبل ( تیل پر مشتمل) وٹامنز لینے کا صحیح وقت

وٹامن A، E ، D اور K کا شام کے کھانے کے ساتھ استعمال کرنا مفید ثابت ہوتا ہے، ان وٹامنز کو ہضم ہونے کے لیے چکناہٹ کی ضرورت ہوتی ہے، جب ان وٹامنز کا زیادہ استعمال کیا جائے تو یہ انسانی جگر میں جمع ہونا شروع ہو جاتے ہیں، ان وٹامنز سے بھر پور فائدہ اُٹھانے کے لیے ان کا استعمال ایسی غذاؤں کے ساتھ کرنا چاہیے جن  میں سیچوریٹڈ فیٹ موجود ہوں۔

واٹر سلیوبل (پانی میں گھلنے والے ) وٹامنز لینے کا صحیح وقت

واٹر سلیوبل وٹامنز خالی پیٹ زیادہ بہتر طریقے سے ہضم ہوتے ہیں اور مؤثر طریقے سے انسانی جسم میں اثر انداز ہوتے ہیں، ان وٹامنز کا استعمال صبح کے اوقات میں کھانا کھانے سے 30 سے 2 گھنٹے قبل کیا جا سکتا ہے۔ واٹر سلیوبل وٹامنز پانی کے ساتھ ہضم ہو جاتے ہیں، ان وٹامنز میں وٹامن سی، B کی ساری اقسام ، فولک ایسڈ شامل ہیں۔ واٹر سلیوبل وٹامنز انسانی جسم میں محفوظ نہیں رہتے بلکہ یہ پانی کے ساتھ گھل کر انسانی جسم سے خارج ہو جاتے ہیں ۔

وٹامنز بی لینے کا صحیح وقت

دن کا آغاز بہتر بنانے کے لیے صبح اُٹھتے ہی نہار منہ وٹامنز بی کا استعمال کیا جا سکتا ہے، وٹامنز بی کی ساری اقسام امیون سسٹم یعنی کہ قوت مدافعت بڑھانے اور ذہنی دباؤ کم کرنے میں کردار ادا کرتی ہیں۔ وٹامن بی ، بی 2 ، بی 6، بی 12 قوت مدافعت کے لیے بہترین وٹامنز قرار دیئے جاتے ہیں، وٹامنز بی موڈ بہتر بنانے میں بھی کردار ادا کرتا ہے۔

احتیاط

وٹامنز انسانی صحت کے لیے مفید ہیں مگر ان کا زیادہ استعمال خطرناک ثابت ہو سکتا ہے، اپنی صحت کے مطابق وٹامنز کا انتخاب اپنے ڈاکٹر کے مشورے سے کریں۔ ملٹی وٹامنز کا دن میں ایک سے ز یادہ کیپسول نہ کھائیں۔ اگر حاملہ خاتون کو ملٹی وٹامنز سے ہٹ کر  آئرن کی مقدار زیادہ چاہیے ہو تو ملٹی وٹامنز کی دن میں دو بار کیپسول لینے کے بجائے آئرن یا مطلوبہ وٹامنز کی مقدار بڑھائیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button