صحت

دودھ میں ہلدی ملا کر پینا صحت کے لیے کتنا مفید؟

ہلدی ملے دودھ کا استعمال تو صدیوں سے برصغیر میں ہورہا ہے اور اب مغربی ممالک میں بھی اسے مقبولیت حاصل ہورہی ہے۔

یہ زرد رنگ کا مشروب دودھ اور ہلدی پر مبنی ہوتا ہے جس میں کچھ لوگ مختلف غذائی اشیا جیسے دار چینی اور ادرک کو بھی شامل کرلیتے ہیں۔ایسا مانا جاتا ہے کہ اس مشروب کے متعدد فعائد ہیں اور اسے متعدد طبی امراض کے گھریلو ٹوٹکے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور

اس مشروب کا بنیادی جز ہلدی ہے جس کا استعمال کھانوں کے لیے عام ہوتا ہے اور ہلدی اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتی ہے۔اینٹی آکسائیڈنٹس ایسے مرکبات کو کہا جاتا ہے جو خلیات کو پہنچنے والے نقصان سے لڑنے کے ساتھ جسم کو تکسیدی تناؤ سے تحفظ فراہم کرتے ہیں۔یہ مرکبات ہمارے خلیات کے افعال کے لیے ناگزیر ہوتے ہیں اور تحقیقی رپورٹس سے ثابت ہوا ہے کہ اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور غذاؤں کاا استعمال مختلف امراض اور بیماریوں کا خطرہ کم کرتا ہے۔ہلدی دودھ میں دار چینی اور ادرک بھی اینٹی اکسائیڈنٹس سے بھرپور غذائی اشیا ہیں۔

ورم اور جوڑوں کی تکلیف میں کمی

ہلدی ملے دودھ میں موجود اجزا ورم کش ہوتے ہیں۔ دائمی ورم دائمی امراض بشمول کینسر، میٹابولک سینڈروم، الزائمر اور امراض قلب میں بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ ورم کش مرکبات سے بھرپور غذاؤں سے ان امراض کا خطرہ کم کیا جاسکتا ہے۔تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ ادرک، چینی اور ہلدی ورم کش خصوصیات سے لیس ہوتے ہیں، جس سے جوڑوں کی تکلیف میں کمی آنے کا امکان ہوتا ہے۔

یادداشت اور دماغی افعال میں ممکنہ بہتری

ہلدی دودھ دماغ کے لیے بھی فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔تحقیقی رپورٹس سے ثابت ہوا ہے ککہ ہلدی سے بی ڈی این ایف نامی مرکب کی سطح مین اضافہ ہوتا ہے جو دماغ میں نئے کنکشنز اور خلیات کی نشوونما میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔اس مرکب کی سطح میں کمی سے دماغی امراض جیسے الزائمر کا خطرہ بھی بڑھ سکتا ہے، دیگر اجزا سے بھی یہ فوائد حاصل ہوسکتے ہیں۔الزائمر کے مریضوں کے دماغ میں ایک مخصوص پروٹین اکٹھا ہونے لگتا ہے اور ٹیسٹ ٹیوب تحقیقی رپورٹس کے مطابق دارچینی میں موجود مرکبات سے اس پروٹین کے اجتماع کو کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

ادرک بھی دماغی افعال بشمول ردعمل کا وقت اور یادداشت میں بہتری آسکتی ہے۔ جانوروں پر ہونے والی کچھ تحقیقی رپورٹس میں دریافت کیا گیا کہ ادرک سے عمر کے ساتھ دماغی افعال میں آنے والی کمی سے تحفظ مل سکتا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.