صحت

دماغ کو صحت مند رکھنے میں مدد گار غذائیں؟

عمر بڑھنے کے ساتھ دماغی تنزلی سے محفوظ رہنا چاہتے ہیں تو پھلوں، سبزیوں، بیجوں اور دیگر غذاؤں کا استعمال معمول بنالیں۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ ورم کش خصوصیات رکھنے والی غذاؤں کا استعمال عمر بڑھنے کے ساتھ ڈیمینشیا کا شکار ہونے کا خطرہ کم کرتا ہے۔کاپوڈسٹریشن یونیورسٹی کی اس تحقیق میں بتایا گیا کہ ورم بڑھانے کا باعث بننے والی غذاؤں کا استعمال یاد داشت سے محرومی، زبان کے مسائل، مسائل حل کرنے کی صلاحیت اور سوچ سے جڑی دیگر صلاحیتوں کا امکان 3 گنا بڑھ جاتا ہے۔

تحقیق میں مزید بتایا گیا کہ ورم کش غذا کا استعمال ڈیمینشیا میں مبتلا ہونے کا خطرہ کم کرتا ہے۔ غذا ممکنہ طور پر دماغی صحت پر متعدد میکنزمز کے ذریعے اثرات مرتب کرتی ہے اور ہمارے نتائج کے مطابق ورم ان میں سے ایک ہے۔

اس تحقیق میں ایک ہزار سے زیادہ معمر افراد کو شامل کیا گیا تھا او ان سے سوالنامے بھروا کر غذائی عادات کی جانچ پڑتال کی گئی۔

تحقیق کے آغاز میں کسی میں بھی ڈیمینشیا کی تاریخ نہیں تھی اور 3 برسوں کے دوران 6 فیصد میں دماغی تنزلی کی تشخیص ہوئی۔تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ مغربی طرز کی غذا کے استعمال سے ڈیمینشیا کا خطرہ 21 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔اس کے مقابلے میں پھلوں، سبزیوں، بیجوں، دالوں، کافی یا چائے کا زیادہ استعمال دماغی تنزلی سے متاثر ہونے کا خطرہ کم کرتا ہے۔

تحقیق کے مطابق طرز زندگی دماغی صحت پر اہم کردار ادا کرتا ہے، خصوصاً اوپر درج کی گئی غذا کی ورم کش خصوصیات دماغی شریانوں کو نقصان نہیں پہنچنے دیتی۔ اس غذا کے استعمال 11 سو افراد کو 12 سال سے زائد عرصے تک کرایا گیا اور نتائج سے معلوم ہوا کہ اس سے الزائمر کے خطرے کو ساڑھے 3 سال تک ٹالا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جو لوگ سبزیوں، مچھلی، گریوں اور زیتون کے تیل کی غذا پر ٹکے رہتے ہیں، ان کا دماغ لمبے عرصے تک صحت مند رہتا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.