صحت

چقندر کا جوس امراض قلب کے مریضوں کے لیے مفید

چقندر کے جوس کا ایک گلاس روز پینا دل کی شریانوں کے شکار افراد میں نقصان دہ ورم کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

یہ بات برطانیہ میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔دل کی شریانوں کی بیماری امراض قلب کی سب سے عام قسم ہے اور اسے دنیا بھر میں اموات کی سب سے بڑی وجہ بھی مانا جاتا ہے۔اس بیماری سے متاثر افراد کے جسم میں نائٹرک ایسڈ کی سطح گھٹ جاتی ہے۔نائٹرک آکسائیڈ اچھی صحت کے لیے بہت اہم ہوتا ہے کیونکہ یہ بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں کردار ادا کرتا ہے۔

کوئین میری یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ عمومی طور پر ورم جسم کو کسی انجری اور بیماری سے تحفظ فراہم کرنے کے لیے اہم ہوتا ہے، مگر دل کی شریانوں کے امراض کے شکار افراد میں ورم مسلسل برقرار رہتا ہے جس سے مزید شریانیں متاثر ہوتی ہیں اور  ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھتا ہے۔

محققین نے بتایا کہ تحقیق سے عندیہ ملتا ہے کہ چقندر کے جوس کا ایک گلاس روز پینا جسم کو نائٹرک آکسائیڈ فراہم کرتا ہے جو ورم میں کمی لاتا ہے۔

واضح رہے کہ چقندر میں نائٹریٹ کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے جو جسم میں جاکر نائٹرک ایسڈ میں بدل جاتی ہے۔

اس تحقیق میں 114 صحت مند افراد کو شامل کیا گیا تھا جن میں سے 78 کو ایک ٹائیفائیڈ ویکسین استعمال کرائی گئی جس سے عارضی طور پر خون کی شریانوں میں ورم بڑھ گیا جبکہ دیگر 36 کی جلد پر ایک کریم سے ورم پیدا کیا گیا۔

اس کے بعد ان افراد کو 7 دن تک ہر صبح 140 ملی لیٹر چقندر کا جوس استعمال کرایا گیا، مگر 50 فیصد رضاکاروں کے مشروب میں نائٹریٹ کی مقدار زیادہ تھی جبکہ باقی 50 فیصد کے مشروب میں سے نائٹریٹ کو نکال دیا گیا تھا۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ نائٹریٹ سے بھرپور مشروب پینے والے افراد کے خون میں نائٹرک آکسائیڈ کی سطح میں دوسرے گروپ کے مقابلے میں نمایاں اضافہ ہوا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.