صحت

گردوں میں پتھری والے مریضوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی، سب حیران رہ گئے

جس سے گردوں میں موجود پتھری کو بغیر تکلیف کے نکالا جاسکتا ہے جبکہ مریض کو anesthesia دینے کی ضرورت بھی نہیں پڑتی: ماہرین

گردوں میں پتھری والے مریضوں کے لئے بڑی خوشخبری آگئی اب گردوں میں پتھری کا علاج بغیر درد کے ہوا آسان، سب حیران و پریشان ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق گردوں میں پتھری کو نکالنے کے لیے اس وقت جو طبی طریقہ کار اختیار کیا جاتا ہے وہ کافی تکلیف دہ ہوتا ہے مگر اب ماہرین نے ایک نئے طریقہ کار کی آزمائش کی ہے جس سے گردوں میں موجود پتھری کو بغیر تکلیف کے نکالا جاسکتا ہے جبکہ مریض کو anesthesia دینے کی ضرورت بھی نہیں پڑتی۔

یونیورسٹی آف واشنگٹن اسکول آف میڈیسین کے ماہرین نے 2 الٹرا سانڈ ٹیکنالوجیز کو ملا کر گردوں کی پتھری کو نکالنے کے اس طریقہ کار کو تشکیل دیا۔ اس طریقہ کار کے تحت ڈاکٹر کی جانب سے transducer کو جلد سے لگاکر الٹرا سانڈ لہروں کو براہ راست پتھری کی جانب بھیجا جاتا ہے۔ یہ لہریں پتھری کو حرکت دے کر باہر نکالتی ہیں اور اس طریقہ کار کو برسٹ ویو lithotripsy کا نام دیا گیا ہے۔ اس وقت شاک ویو lithotripsy کے ذریعے پتھری کو نکالا جاتا ہے جس کے دوران مریض کو تکلیف سے بچانے کے لیے anesthesia استعمال کرایا جاتا ہے، مگر اس نئی ٹیکنالوجی سے مریض کو کسی تکلیف کا سامنا نہیں ہوتا۔

محققین کے مطابق اس طریقہ کار سے بہت کم تکلیف ہوتی ہے جبکہ مریض بیدار رہتا ہے اور یہی اہم ترین کامیابی ہے۔ محققین کو توقع ہے کہ اس نئی ٹیکنالوجی سے گردوں سے پتھری کو نکالنے کا کام کسی کلینک یا ایمرجنسی روم میں بھی ممکن ہوجائے گا۔ اس طریقہ کار کی آزمائش کے لیے 29 مریضوں کو ایک تحقیق میں شامل کیا گیا۔ اس طریقہ علاج کے بعد 2 ہفتوں تک ان مریضوں کا جائزہ لیا گیا اور پتھری کے انخلا میں کامیابی کو دریافت کیا گیا۔ اب محققین کی جانب سے ایک کنٹرول گروپ پر کلینیکل ٹرائل کیا جائے گا اور دیکھا جائے گا کہ یہ نئی ٹیکنالوجی کس حد تک مثر ہے۔ اس تحقیق کے نتائج جرنل آف یورولوجی میں شائع ہوئے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.