انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

ٹرمپ کی پالیسی تبدیلی، بھارتی وجو د خطرے میں

امریکہ کا ملیریا کیلئے استعمال ہونیوالی دوا مطالبہ، مودی سرکار کا انکار، ٹرمپ نے جوابی کارروائی کا عندیہ دیدیا

امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے بھارت کے حوالے سے اپنی پالیسی میں واضح تبدیلی کی ہے جس کے بعد بھارت کا وجود خطرے میں پڑ گیا ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق امریکہ کے صدر ٹرمپ نے مودی سرکار کی بھارت میں انسانیت سوز سلوک اور مسلم مخالف بل سمیت مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کا نفاذ سمیت دیگر ہندؤ مظالم کارروائیاں جاری رکھنے پر اپنی پالیسی میں تبدیلی کی ہے جس کے بعد بھارت کا وجود خطرے میں پڑ گیا ہے جبکہ دوسری طرف امریکہ نے مودی سرکار سے ملیریا کے علاج کیلئے استعمال ہونے والی ادویات کا بھی مطالبہ کیا تھا جو مودی سرکار نے دینے سے انکار کر دیا تھا۔

واضح رہے کہ امریکی ڈرگ اینڈ فوڈ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے)نے ملیریا کے علاج کے لیے استعمال ہونے والی معروف ادویات کلوروکوئن اور ہائیڈرو آکسی کلوروکوئن کو کورونا وائرس کے مریضوں پر استعمال کرنے کی تجویز دی ہے۔ ایسے میں بھارت وہ ملک ہے جہاں ہائیڈروکسی کلوروکوئن ادویات بڑی تعداد میں بنائی جاتی ہیں۔

اس سلسلے میں امریکی انتظامیہ نے بھارتی وزریراعظم نریندر مودی سے ٹیلی فونک رابطہ کرکے ادویات کے لیے مدد کی درخواست کی جس پر نریندر مودی نے حامی بھری لیکن بھارت کی جانب سے ادویات کی سپلائی پر پابندی برقرار ہے۔ بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی حکومت ٹرمپ کی درخواست پر غور کر رہی ہے اور فیصلہ جلد کیا جائے گا۔

برطانوی میڈیا کے مطابق گزشتہ روز وائٹ ہاس میں بریفنگ کے دوران امریکی صدر نے کہا کہ بھارت نے تجارت میں امریکا سے بہت فائدہ اٹھایا ہے، پھر بھی اگر وہ دوا دینے سے انکار کرے گا تو حیرانی ہوگی۔ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم مودی سے بات کی ہے، دیکھتی ہیں کہ کیا فیصلہ ہوگا، یقینا اگر بھارت نے اجازت نہ دی تو جوابی اقدام کریں گے۔ واضح رہے کہ کورونا کے خلاف مؤثرمفید قرار دیے جانے کے دعوں پر بھارت نے ہائیڈورکسی کلوروکوئن دوا کی برآمد پر پابندی لگا رکھی ہے۔

Tags
Back to top button
Close