انٹرنیشنل

چین کا ایک اورعلاقے پرقبضہ،بھارت میں صف ماتم بچھ گئی

چین اوربھارت کےمابین کشیدگی عروج پرہے، دونوں ممالک میں نوک جھونک کا سلسلہ بھی جاری ہے

چین اوربھارت کےمابین کشیدگی عروج پرہے، دونوں ممالک میں نوک جھونک کا سلسلہ بھی جاری ہے، علاقوں پرقبضےکےدعوے دار بھارت نےارونا چل پردیش کوبھارتی علاقہ قراردیا جبکہ چین نےدعوے کومسترد کردیا ہے۔ تفصیلات کےمطابق چین نےارونا پردیش کو بھارتی ریاست تسلیم کرنےسےانکارکردیا ہے اورعلاقے کوتبت ریجن کا حصہ قراردیا ہےجوکہ چین کےجنوب میں واقع ہے۔ چینی وزارت خارجہ نےبیان جاری کیا ہےجس میں انہوں نےارونا چل پردیش کوبھارتی علاقہ تسلیم کرنےسےانکارکیا ہے۔ بیان کےسامنےآتے ہی بھارت میں ہلچل مچ گئی اوربھارت چین پرطرح طرح کی الزام تراشیاں کرنےلگا ہے۔

بھارتی فوجیوں کے اغواء کا معاملہ بھی چین کے گلے میں ڈال دیا ہے جس کاچینی وزارت خارجہ نے دوٹوک لفظوں کہا ہے کہ بھارتی فوجیوں کے اغواء کے بارے میں ہمارے پاس کوئی معلومات نہیں ہیں۔ وزارت خارجہ کے ترجمان ژالی جیان جے کہا ہے کہ ارونا چل پردیش چین کا حصہ ہے جو کہ تبت ریجن میں آتا ہے۔ جبکہ دوسری جانب بھارتی فوج نے کہا ہے کہ اس کے پانچ عام شہری لاپتہ ہیں جن کے بارے میں چینی فوج سے دریافت کیا گیا ہے کہ آیا وہ ان کے قبضے میں تو نہیں۔ بھارتی فوج کے مطابق پانچوں لاپتہ افراد کا تعلق ریاست اروناچل پردیش سے ہے جس پر چین بھی اپنا حق جتاتا ہے اور اسے جنوبی تبت کا نام دیتا ہے۔

Back to top button