انٹرنیشنل

کورونا ویکسین کودنیا بھرمیں پہنچانا چیلنج بن گیا

وائرس کی ویکسین کودنیا بھرمیں پہنچانےکےلیےبوئنگ 747 جیسا حجم رکھنےوالے 8ہزارجہازدرکارہوں گے

ائیرلائن انڈسٹری کےمطابق کورونا وائرس کی ویکسین کودنیا بھرمیں پہنچانا اب تک کی تاریخ کا سب سےبڑا چیلنج ہوگا۔ انٹرنیشنل ائیر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (آئی اے ٹی اے) کا کہنا ہےکہ کورونا وائرس کی ویکسین کودنیا بھرمیں پہنچانے کے لیے بوئنگ 747 جیسا حجم رکھنے والے 8ہزارجہازدرکارہوں گے۔ یاد رہے کہ ابھی تک دنیا میں کسی بھی ملک کو اس مہلک وائرس کی ویکسین کی تیاری میں پوری طرح سے کامیابی حاصل نہیں ہو سکی ہے تاہم آئی اے ٹی اے نے ابھی سے مختلف آئیرلائنز، آئیرپورٹس اور صحت پر کام کرنے والی عالمی تنظیمیں اور دوا ساز کمپنیوں سے ویکسین کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لیے بات چیت کا آغاز کر دیا ہے۔

ڈسٹریبوشن کے اس اندازے میں فرض کیا گیا ہے کہ دنیا میں اگرہرشخص کے لیے صرف ایک ویکسین پہنچائی جائے تو اس کے لیے اتنی بڑی تعداد میں طیاروں کی ضرورت ہو گی۔ آئی اے ٹی اے کے چیف ایگزیکٹیو الیگزینڈر ڈی جولیاک کا کہنا ہے کہ "کورونا وائرس کی ویکسین کو ہر جگہ پہنچانا عالمی فضائی گارگو انڈسٹری کے لیےاس صدی کا سب سے بڑا مشن ہو گا ۔۔۔لیکن یہ محتاط منصوبہ بندی کے بغیر ممکن نہیں ہے جس کا بہتر وقت ابھی ہے۔” یاد رہے کہ اس وقت دنیا بھر میں تقریباً 140 ویکسینز اس وقت تیاری کے مراحل میں ہیں جب کہ دودرجن کے قریب ویکسینزایسی ہیں جواس وقت انسانوں پرجانچ کے مرحلے سےگزر رہی ہیں۔

Back to top button