انٹرنیشنل

ٹرمپ کےداماد جیرڈکشنرنےبحرین ,اسرائیل معاہدہ پرکیا کہا؟

کشنرنےتوقع ظاہرکی کہ مشرقِ وسطیٰ کےتمام ممالک اسرائیل سےتعلقات استوارکرلیں گے

صدرٹرمپ کےداماد اورمشیرجیرڈ کشنرنےبحرین کےاسرائیل سےتعلقات قائم کرنےکےاعلان کونائن الیون جیسےواقعات،انہتا پسندی اوردہشت گردی روکنےکےلیےبہترین اقدام قراردیا۔ کشنرنےتوقع ظاہرکی کہ مشرقِ وسطیٰ کےتمام ممالک اسرائیل سےتعلقات استوارکرلیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بحرین کا اقدام خطےکےممالک کومسئلہ فلسطین اپنےقومی مفادات اورخارجہ پالیسی سےالگ کرنےکا موقع دے گا۔ ایوانکا ٹرمپ نے کہا ہےکہ کشنرنےپچھلےہفتےہی بحرین کےبادشاہ اورسعودی ولی عہد سےملاقات کی تھی جوآج کی ڈیل کی نشاندہی کرتی ہے۔ واضح رہےکہ بحرین کی جانب سےمتحدہ عرب امارات کی طرح اسرائیل سےسفارتی تعلقات قائم کرنےکا اعلان سامنےآیا ہے، دونوں ممالک سفارتی تعلقات کےقیام سےمتعلق معاہدے پرباضابطہ دستخط منگل کوکریں گے۔

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نےبحرین کےبادشاہ حمد بن عیسیٰ الخلیفہ اوراسرائیل کےوزیرِاعظم بنجامن نیتن یاہوسےٹیلی فون پربات کی جس کے بعد ٹوئٹ میں اعلان کیا کہ بحرین اوراسرائیل بھی امن ڈیل کےلیےمتفق ہوگئےہیں۔ 30 روزمیں بحرین دوسرا عرب ملک ہےجواسرائیل سے تعلقات قائم کرنےپرمتفق ہوا ہے۔ امریکا،بحرین اوراسرائیل کی جانب سےجاری مشترکہ بیان کےمطابق اس اقدام سےمشرقِ وسطیٰ میں استحکام، تحفظ اورخوش حالی بڑھےگی۔ بحرین کےبادشاہ نےاسرائیلیوں اورفلسطینیوں کےدرمیان دوریاستی حل کی بنیاد پردائمی امن کی ضرورت پرزوردیا ہے۔ اسرائیل سےامارات اوربحرین کےسفارتی تعلقات کےقیام سےمتعلق دستخطی تقریب کی میزبانی صدرٹرمپ کریں گے۔ وسری جانب بحرین کےاسرائیل سےتعلقات قائم کرنےکےاعلان کی فلسطینی اتھارٹی نےمذمت کرتےہوئےبحرین سےاحتجاجاً اپنا مندوب واپس بلا لیا ہے۔

فلسطینی اتھارٹی نےبحرین کےاقدام کومقبوضہ بیت المقدس، مسجدِ اقصیٰ اورمسئلہ فلسطین سےغداری قراردیا ہے۔ فلسطینی اتھارٹی کے سیکریٹری جنرل صائب اریقات نےکہا ہےکہ امارات کی طرح بحرین بھی فلسطینی عوام کےحقوق کوڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی مہم پرقربان کررہا ہے۔ عرب امارات کےاسرائیل سےتعلقات کےقیام کےاعلان پربھی فلسطین نےسخت ردِعمل ظاہرکیا تھا تاہم عرب لیگ نےامارات کی مذمت سےمتعلق فلسطینی قرارداد منظورنہیں کی تھی۔

Back to top button