انٹرنیشنل

ہیلری کلنٹن نےنوازشریف کےبیانیہ کی تصدیق کردی

امریکہ کی سابق سیکرٹری اسٹیٹ نےکہا کہ ڈیپ اسٹیٹ کی بہترین مثال پاکستان کی ہےکہ جہاں ملکی معاملات سول حکومت نہیں بلکہ آرمی اورآئی ایس آئی چلاتی ہے

ہیلری کلنٹن نےنوازشریف کےبیانیہ کی تصدیق کردی، امریکہ کی سابق سیکرٹری اسٹیٹ نےایک انٹرویومیں پاکستان کو”ڈیپ اسٹیٹ“کی اعلیٰ ترین مثال کہہ کرسوال کا جواب دیا۔ گزشتہ ہفتےایک ٹی وی انٹرویو میں جب اینکرنےہلیری کلنٹن سے سوال کیا کہ ڈیپ اسٹیٹ کیا ہے اوراسےکن لوگوں نےمتعارف کرایااوراس کا مقصد کیا ہے تواس سوال کےجواب میں سابق سیکرٹری اسٹیٹ امریکہ ہلیری کلنٹن نےکہ کہ ”ڈیپ اسٹیٹ“ایک اصطلاح ہےجس کےموجد منجھے ہوئے سیاسی سائنسدان ہیں جومختلف ممالک کی سیاست پرنظررکھتےاورسیاسی چالوں کومختلف اصطلاحوں سےنوازتےہیں۔ انہوں نےکہا کہ ڈیپ اسٹیٹ ایک ایسی ریاست ہوتی ہےجہاں ملکی معاملات کچھ اورذرائع ڈیل کرتےہیں اورکہا کہ ڈیپ اسٹیٹ کی بہترین مثال پاکستان کی ہےکہ جہاں ملکی معاملات سول حکومت نہیں بلکہ آرمی اورآئی ایس آئی چلاتی ہے۔

یعنی ملک کوآئی ایس آئی کنٹرول کرتےہے۔اگرکوئی آرمی کےخلاف بات کرتا ہےیا انہیں پسند نہیں ہوتا یا پھران کی بات نہیں مانتا توانہیں سسٹم سےنکال پھینک دیا جاتا ہے،ان کےخلاف مقدمات بنائےجاتےہیں،انہیں قتل کردیا جاتا ہےیا پھرانہیں جلاوطنی پرمجبورکردیا جاتا ہے۔ یاد رہےکہ ہلیری کلنٹن نےیہ بیان اس وقت دیا ہےجب پاکستان مسلم لیگ ن کےقائد میاں نوازشریف اپنی پریس کانفرنسزاورجلسوں میں براہ راست پاکستان آرمی اورآئی ایس آئی پرسسٹم لپیٹنےاورالیکشن میں دھاندلی کرنےکےعلاوہ سیاسی بارٹرکا الزام لگا رہےہیں۔ نوازشریف کےہی الزام کومدنظررکھتےہوئےہلیری کلنٹن نےڈیپ اسٹیٹ کےمعاملےمیں پاکستان کی مثال دی ہے۔ جب سےہلیری کلنٹن نےانٹرویومیں پاکستان کا حوالہ دیا ہے ان کا انٹرویوسوشل میڈیا پروائرل ہوگیااوربین الاقوامی سطح پربہت کچھ کہنےسننےکومل رہا ہے۔

Back to top button