انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

نوازشریف کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا انتخابات میں دھاندلی کا دعویٰ‘ امریکی وفاقی الیکشن حکام نے بڑا فیصلہ سنا دیا، سب کو زور کا جھٹکا لگ گیا

امریکی وفاقی الیکشن حکام نے 2020ء کے صدارتی انتخابات کو امریکی تاریخ کے سب سے محفوظ ترین الیکشن قرار دیا ہے

نوازشریف کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا انتخابات میں دھاندلی کا دعویٰ پر امریکا کے وفاقی الیکشن حکام نے بڑا فیصلہ سنا دیا جس کے بعد سب کو زور کا جھٹکا لگ گیا ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق امریکی وفاقی الیکشن حکام نے 2020ء کے صدارتی انتخابات کو امریکی تاریخ کے سب سے محفوظ ترین الیکشن قرار دیا ہے۔ الیکشن کمیٹی کا کہنا ہے کہ ووٹنگ سسٹم پر سمجھوتے، ووٹوں کی تبدیلی، ووٹ ڈیلیٹ ہونے یا کھوجانے کے کوئی ثبوت موجود نہیں ہیں۔

امریکی صدر ٹرمپ نے دعوی کیا تھا کہ انہیں کاسٹ کیے گئے 20 لاکھ سے زائد ووٹ ڈیلیٹ کردیے گئے جب کہ ان کی جانب اس کے کوئی ثبوت فراہم نہیں کیے گئے۔ امریکی صدر کے دعوے کے بعد الیکشن انفرا اسٹرکچر گورنمنٹ کوآرڈینیشن کونسل کی جانب سے مشترکہ بیان جاری کیا گیا ہے۔ اس کونسل میں امریکی قومی سلامتی کے سینئر حکام، امریکی الیکشن کمیشن کے حکام اور وہ سرکاری حکام شامل ہیں جنہوں نے انتخابی عمل کی نگرانی کی۔

مشترکہ بیان میں 3 نومبر 2020 کے صدارتی انتخابات کو امریکی تاریخ کے محفوظ ترین انتخابات قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس وقت الیکشن حکام حتمی نتائج سے پہلے ایک بار پھر تمام عمل کا باریک بینی سے جائزہ لے رہے ہیں۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ ہم جانتے ہیں کہ انتخابی عمل کے حوالے سے کئی بے بنیاد دعوے اور غیر مصدقہ خبریں موصول ہوئیں جس کے بعد ہم یہ یقین دہانی کراسکتے ہی کہ ہمارے الیکشن مکمل پر اعتماد اور محفوظ ہیں۔

Back to top button