انٹرنیشنل

کابل یونیورسٹی حملےکا ’’ماسٹرمائنڈ‘‘ گرفتار

خبررساں ادارے کےمطابق کابل یونیورسٹی کا حملےکےمبینہ ماسٹرمائنڈ کا نام عادل ہے

غیرملکی خبررساں ادارے کےمطابق افغانستان کےنائب صدرامراللہ صالح نےاپنےفیس بک پیج پراعلان کیا ہےکہ کابل یونیورسٹی پرہونے والےحملےکےماسٹر مائنڈ کوگرفتارکرلیا گیا ہے۔ حملےکا مقصد حکومت کوبدنام اورکمزورظاہرکرنا تھا۔ خبررساں ادارے کےمطابق کابل یونیورسٹی کا حملےکےمبینہ ماسٹرمائنڈ کا نام عادل ہےاوراس کا تعلق افغان صوبہ پنج شیرسےہے۔ اس کا کہنا ہےکہ کارروائی کےلیےاس نے حقانی نیٹ ورک سےہتھیارحاصل کیے۔

افغان حکومت نےابتدا میں افغان طالبان پرحملےکا الزام عائد کیا تھا جس کی طالبان نےتردید کی تھی۔ بعدازاں داعش نےکابل یونیورسٹی اور اس سےکچھ روزقبل ایک اورتعلیمی ادارے کےنزدیک ہونےوالےحملےکی ذمےداری قبول کرلی۔ واضح رہےکہ 2 نومبرکوکابل یونیورسٹی میں ہونےوالےحملے 30 افراد جاں بحق اور 27 زخمی ہوئےتھے۔ حملہ آوروں نےیونیورسٹی کی عمارت میں داخل ہوکرکلاس رومزمیں گولیاں برسائی تھیں۔ بعد ازاں واقعےکی کئ اندوہ ناک تفصیلات بھی سامنےآئیں۔

متعلقہ خبریں