انٹرنیشنل

ٹرمپ سے تعلق ختم، مودی نے نو منتخب امریکی صدر جوبائیڈن کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھا دیا، حیران کن رپورٹ سامنے آگئی

امریکا کے منتخب صدر جو بائیڈن سے منگل سترہ نومبر کی شب ٹیلی فون پر رابطہ کر کے انہیں صدارتی الیکشن میں کامیابی پر مبارک باد پیش کی

بھارت کے وزیراعظم نریندرا مودی نے ٹرمپ سے تعلق ختم کرتے ہوئے امریکا کے نو منتخب صدر جوبائیڈن کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھاتے ہوئے مبارکباد دے دی ہے۔

بین الاقوامی سطح پر ڈونلڈ ٹرمپ اور نریندر مودی کی دوستی کے کافی چرچے رہے ہیں۔ مگر اب جبکہ ٹرمپ نے ابھی تک الیکشن میں شکست تسلیم نہیں کی، مودی نے جو بائیڈن کو جیت پر انہیں فون کر کے مبارک باد دے دی ہے۔ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے امریکا کے منتخب صدر جو بائیڈن سے منگل سترہ نومبر کی شب ٹیلی فون پر رابطہ کر کے انہیں صدارتی الیکشن میں کامیابی پر مبارک باد پیش کی۔ مودی نے کہا کہ بائیڈن کی فتح امریکا میں مضبوط جمہوریت کی عکاسی کرتی ہے۔ بھارتی وزیر اعظم نے امریکا کے ساتھ باہمی تعلقات کو اور زیادہ بہتر بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔

امریکا میں تین نومبر کو صدارتی انتخابات منعقد ہوئے تھے۔ اب تک سامنے آنے والے نتائج کے مطابق ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار جو بائیڈن جیت کے لیے الیکٹورل کالج کے مطلوبہ ووٹ حاصل کر چکے ہیں لیکن ری پبلکن پارٹی کے امیدوار اور موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چند ریاستوں کے نتائج کو دھاندلی کے الزامات لگا کر چیلنج کر رکھا ہے۔ اس بارے میں امریکی محکمہ انصاف کی جانب سے حتمی فیصلہ آنا ابھی باقی ہے۔ نریندر مودی روایتی طور پر ٹرمپ کے قریبی ساتھی رہے ہیں اور دونوں کی حکمرانی میں بھارت اور امریکا کے باہمی تعلقات بہتر ہوئے ہیں۔ صدارت کی دوڑ میں آگے نکلتے ہی بھارتی وزیر اعظم نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر بائیڈن کو مبارک باد پیش کی تھی۔ گو کہ صدر ٹرمپ نے ابھی تک باقاعدہ طور پر اپنی شکست تسلیم نہیں کی ہے اور وہ پراصرار ہیں کہ ‘ان سے ان کا مینڈیٹ چرایا جا رہا ہے۔

Back to top button