انٹرنیشنل

انڈونیشیا:شدید احتجاج پراسکارف پہننےکی پابندی ختم

انڈونیشیا میں ملک بھر کے اسکولوں میں طالبات کے لیے اسکارف پہننے کی پابندی کو اُٹھالیا گیا ہے

عالمی خبررساں ادارے کےمطابق انڈونیشیا کےوزیرتعلیم ندیم مکرم نےاسکارف پہننےکی لازمی پابندی کوختم کرنےکا اعلان کرتےہوئےکہا ہےکہ خلاف ورزی کےمرتکب اسکولوں کی سرکاری گرانٹ کم کردی جائےگی۔ لباس ذاتی انتخاب ہےجس پراسکول دباؤنہیں دال سکتا۔ اسکارف پہننےکی پابندی کوہٹانےکا معاملہ اس وقت سامنےآیا جب مغربی سماترا کےپڈانگ شہرمیں مسیحی طالبہ کواسکارف پہننےپرمجبور کیا گیا۔ طالبہ کےانکارپراسےاسکول سےنکالنےکی دھمکی دی گئی۔

مسیحی طالبہ کےوالدین نےاس سلسلےمیں اسکول کےعہدیدارسےملاقات کی ویڈیوریکارد کرکےوائرل کردی جس میں اسکول انتظامیہ مسیحی ہونےکےباوجود اسکارف پہن کرآنےپربضد تھے۔ ویڈیووائرل ہونےپراسکول نے معذرت کرلی تھی۔ انسانی حقوق کی تنظیموں نےاس واقعےپر ملک بھرمیں شدید احتجاج کیا جس کےبعد اسکارف پہننےکی پابندی کوہٹالیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button