انٹرنیشنل

جہیز کا تنازع، ندی میں کود کر جان سے جانے والی عائشہ کے کیس کے متعلق عدالت کا بڑا حکم، شوہر کے متعلق بڑا حکم سامنے آنے کے بعد مقتولہ کے ورثاء خوشی سے نڈھال

عدالت کا ملزم عارف کو ضمانت پر رہا کرنے کی اجازت دینے سے انکار‘پولیس اس کیس کے سلسلے میں مزید تفتیش جاری رکھے گی

جہیز کا تنازع، ندی میں کود کر جان سے جانے والی عائشہ کے کیس کے متعلق عدالت کا بڑا حکم، شوہر کے متعلق بڑا حکم سامنے آنے کے بعد مقتولہ کے ورثاء خوشی سے نڈھال ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں ندی میں کود کر خود کشی کرنے والی عائشہ کے کیس میں مزید پیش رفت ہوئی ہے۔ انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق عائشہ کے شوہر عارف کی جانب سے عدالت میں ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست دائر کی گئی تھی، جس پر اب فیصلہ سنا دیا گیا۔ عدالت نے عائشہ کے شوہر عارف کیخلاف سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بظاہر تمام الزامات درست لگ رہے ہیں، جبکہ یہ واقعہ ہندوستانی معاشرے کا بدنما داغ ہے۔ عدالت نے ملزم عارف کو ضمانت پر رہا کرنے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے، جس کے بعد پولیس اس کیس کے سلسلے میں مزید تفتیش جاری رکھے گی۔

واضح رہے کہ گذشتہ ماہ بھارت میں سسرال والوں کے طعنوں سے تنگ آ کر نوجوان لڑکی نے ندی میں کود کر خودکشی کر لی تھی، لڑکی کی خودکشی سے قبل بنائی گئی اور والد سے کی گئی گفتگو کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوئی۔ ویڈیو میں سنا جا سکتا ہے کہ عائشہ اپنے والدین سے گفتگو کر رہی ہیں جس میں والدین اسے انتہائی قدم اٹھانے سے روک رہے ہیں۔ عائشہ کے والد کا کہنا تھا کہ میری بات سنو بیٹا جس پر عائشہ کہتی ہیں کہ مجھے کچھ نہیں سننا پاپا،والد نے کہا کہ بیٹا امی سے بات کرو،والدہ بھی اپنی بیٹی کو خودکشی کرنے سے روکنے کا کہہ رہی ہیں،وہ کہتی ہیں کہ اگر تم ایسا قدم اٹھا گی تو لوگ کہیں گے تم قصور وار سمجھیں گے، اس پر عائشہ کہتی ہے کہ جسے جو چاہیے بولنا ہے بولنے دیں۔ میں بس تھک چکی ہوں اپنی زندگی کا خاتمہ کرنا چاہتی ہوں۔والدین عائشہ کو خودکشی سے روکنے کے لیے وعدے قسمیں دیتے رہتے ہیں۔لیکن وہ کہتی ہے کہ وہ زندگی سے تنگ آ چکی ہے،اگر بچ گئی تو وہ اسے لینے آ جائیں ورنہ تدفین کر دیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button