انٹرنیشنل

کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے روسی صدر پیوٹن کے لئے انتظامیہ نے کون کون سے اقدامات کیے؟ حیران کن حقائق سامنے آنے کے بعد پوری دنیا حیران رہ گئی

روسی حکام نے صدر ولادیمیر پوتن کو اس وائرس سے محفوظ رکھنے کے لیے انتہائی غیر معمولی اقدامات کیے ہیں

کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے روسی صدر پیوٹن کے لئے انتظامیہ نے کون کون سے اقدامات کیے؟ حیران کن حقائق سامنے آنے کے بعد پوری دنیا حیران رہ گئی ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق کورونا کی وبا جب سے شروع ہوئی ہے، تب سے اب تک روسی حکام نے صدر ولادیمیر پوتن کو اس وائرس سے محفوظ رکھنے کے لیے انتہائی غیر معمولی اقدامات کیے ہیں۔ان غیر معمولی اقدامات کو کیسے ممکن بنایا جاتا ہے اور اس پر کتنا خرچہ آتا ہے، یہ ایک دلچسپ کہانی ہے۔ ذشتہ سال سے اب تک روس میں سینکڑوں افراد کو صرف اس لیے قرنطینہ میں رہنا پڑا کیونکہ انھیں ولادیمیر پوتن سے قریبی رابطے میں آنا تھا۔ مگر کئی لوگوں کو تو اس وقت بھی خود ساختہ تنہائی اختیار کرنی پڑی جب انھیں صدر کے براہِ راست سامنے نہیں آنا تھا مگر وہ ان لوگوں سے مل چکے تھے جن کی صدر پوتن سے مستقبل قریب میں ملاقات ہونا طے تھی۔25 مارچ 2020 کو صدر پوتن نے قوم سے خطاب میں اعلان کیا تھا کہ روس میں یکم اپریل سے ایک ہفتے کے لیے کام کاج بند کر دیا جائے گا کیونکہ کورونا ملک میں تیزی سے پھیل رہا تھا۔ اس اعلان کے بعد اپریل میں ایک جامع لاک ڈان نافذ کیا گیا جس میں غیر ضروری دکانیں بند کر دی گئی، عوامی اجتماعات پر پابندی عائد کر دی گئی اور آبادی کا ایک بڑا حصہ اپنے گھر سے کام کرنے لگا۔اسی دوران صدر پوتن اور دیگر اعلی روسی حکومتی عہدیداروں کو خدمات فراہم کرنے والے خصوصی فضائی عملے روسیا کو بھی 26 مارچ 2020 کو پہلی بار ماسکو کے قریب ہی ایک ہوٹل میں قرنطینہ میں رکھا گیا۔

اس کے بعد سے اب تک سینکڑوں پائلٹس، طبی عملے کے ارکان، ڈرائیورز اور دیگر افراد سمیت صدر سے ملنے آنے والوں کو روس بھر کے درجنوں ہوٹلز میں قرنطینہ اختیار کرنا پڑا ہے تاکہ صدر پوتن کورونا کے انفیکشن سے محفوظ رہ سکیں۔ حال ہی میں یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ روسی صدر کو روس میں ہی تیار کی گئی ایک ویکسین لگائی گئی ہے تاہم یہ نہیں بتایا گیا کہ اس ویکسین کا نام کیا ہے۔ لیکن اس کے باوجود بظاہر ان قرنطینہ ہوٹلز کے ساتھ معاہدے اگلے سال تک کے لیے کر لیے گئے ہیں۔ بی بی سی رشیئن سروس نے حساب لگایا ہے کہ صدارتی معاملات کو چلائے رکھنے کے ذمہ دار ادارے ڈائریکٹوریٹ آف دی پریزیڈینٹ آف دی رشیئن فیڈریشن کو کورونا کا مقابلہ کرنے کے لیے ریاستی بجٹ سے 6.4 ارب روبلز (تقریبا آٹھ کروڑ 40 لاکھ ڈالر)دیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button