انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

میں اپنی والدہ کو نہیں بتا سکتی کہ میں کیا گل کھلاتی ہوں اور اگر میں یہ سچ زبان پر لے آئی تو پھر وہ دن میرے لیے ………………؟ دردناک المیہ نے سب کو چونکا کر رکھ دیا

انٹرنیٹ کے اس دور میں سنگاپور کے نوجوانوں کے پاس بہتر متبادل موجود ہیں جہاں اس طرح کے مسائل سے نمٹنے میں انھیں شرمندہ نہیں کیا جاتا

میں اپنی والدہ کو نہیں بتا سکتی کہ میں کیا گل کھلاتی ہوں اور اگر میں یہ سچ زبان پر لے آئی تو پھر وہ دن میرے لیے ………………؟ دردناک المیہ نے سب کو چونکا کر رکھ دیا ہے۔

انصرنیشنل میڈیا کے مطابق سنگاپور کی رہائشی نادیہ جنسی طور پر منتقل ہونے والے انفیکشن (ایس ٹی آئی)کا ٹیسٹ کروانے کے لیے جب ایک مقامی کلینک پہنچیں تو انھوں نے ڈاکٹر کے دفتر سے شرمندہ ہو کر واپس آنا ہی مناسب سمجھا۔ 24 سالہ طالبہ نادیہ کہتی ہیں کہ وہاں ایک معمر خاتون ڈاکٹر نے ان کی حوصلہ شکنی کی اور کچھ کتابچے ان کی طرف اس انداز میں پھینکے جیسے وہ کوئی احمق ہیں۔ مجھے لگا کہ اس دوران میرے بارے میں غلط سوچا جا رہا ہے، جیسے یہ میری غلطی ہے کہ مجھے انفیکشن ہو گیا ہے اور یہ کہ مجھے اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ سیکس نہیں کرنا چاہیے تھا لیکن اب انٹرنیٹ کے اس دور میں سنگاپور کے نوجوانوں کے پاس بہتر متبادل موجود ہیں جہاں اس طرح کے مسائل سے نمٹنے میں انھیں شرمندہ نہیں کیا جاتا۔ ٹیلی ہیلتھ کی کچھ سٹارٹ اپ کمپنیاں گذشتہ سال سے وجود میں ہیں اور ان کی توجہ جنسی صحت پر ہے۔

ان کمپنیوں کی مدد سے لوگوں کو جنسی صحت سے متعلق اشیا اور تجاویز بغیر کسی شرمندگی مہیا کی جاتی ہیں۔ نادیہ جیسے نوجوان اس طرح کی سروسز کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ سیکس سے متعلق ان لوگوں کے خیالات روایتی سوچ کے برعکس کافی مختلف ہیں۔ نادیہ نے فرنی ہیلتھ نامی کمپنی کی سروس استعمال کی جس نے انھیں گھر بیٹھے ایس ٹی آئی ٹیسٹ فراہم کیا۔ ویب سائٹ پر ڈاکٹر سے ویڈیو کال میں بات کرنے کے بعد انھیں ایک ویجائنل سواب کٹ عام سی پیکنگ میں بھیجی گئی تاکہ وہ ٹیسٹ کے لیے اپنے نمونے دے سکیں۔ اگلے ہی دن کوریئر نے یہ نمونے ان سے حاصل کر لیے اور ایک ہفتے کے اندر اندر انھیں نتائج آن لائن بھیج دیے گئے۔ نادیہ اپنے والدین اور دو بہن بھائیوں کے ساتھ ایک فلیٹ میں رہتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ڈبے پر کچھ بھی لکھا نہیں ہوا تھا۔ کوریئر کو بھی معلوم نہیں تھا کہ اندر کیا ہے۔ یہ اچھی سروس ہے۔ میرا خاندان بہت روایتی ہے۔ میں سنگاپور سے ہوں اور مسلمان بھی۔ کچھ چیزوں کی آپ کو توقع ہو سکتی ہے۔ میں اپنی والدہ کو نہیں بتا سکتی کہ میں سیکس کرتی ہوں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.