انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

امریکا کوشکست فاش،،،کوئی حرکت دوبارہ کرے گا تواس کا حشر؟

ہم نےامریکا کوشکست فاش دیدی اوراب اگروہ کوئی حرکت دوبارہ کرے گا تواس کا حشرایسا ہوگا کہ،،،،،؟ طالبان نےخطرے کی گھنٹی بجادی،

ہم نےامریکا کوشکست فاش دیدی اوراب اگروہ کوئی حرکت دوبارہ کرے گا تواس کا حشرایسا ہوگا کہ،،،،،؟ طالبان نےخطرے کی گھنٹی بجادی، طالبان سمجھتے ہیں کہ فتح ان کی ہے۔ سبز چائے کا کپ پیتے ہوئے حاجی حکمت نے اعلان کیا کہ ’ہم جنگ جیت چکے ہیں اور امریکہ ہار گیا ہے۔‘ امریکی صدر جو بائیڈن کے افغانستان میں موجود بقیہ امریکی افواج کے انخلا میں ستمبر تک تاخیر کرنے کے فیصلے پر طالبان کی سیاسی قیادت نے شدید ردِ عمل ظاہر کیا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ اب امریکی افواج گذشتہ سال متفقہ طور پر یکم مئی کی طے شدہ آخری تاریخ کے بعد بھی ملک میں موجود رہیں گی۔ بہرحال کسی نہ کسی طرح لگتا ہے کہ ہوا کا رخ شدت پسندوں کی طرف ہے۔

حاجی حکمت کہتے ہیں کہ ’ہم ہر چیز کے لیے تیار ہیں۔ ہم امن کے لیے تیار ہیں اور ہم جہاد کے لیے بھی مکمل طور پر تیار ہیں۔‘ ان کے ساتھ بیٹھے ایک فوجی کمانڈر کہتے ہیں کہ ’جہاد عبادت کا ایک عمل ہے۔ اور عبادت ایک ایسی چیز ہے کہ آپ اسے جتنا بھی کریں، آپ اس سے تھکتے نہیں۔‘

گذشتہ ایک سال سے طالبان کے ’جہاد‘ میں ایک واضح تضاد نظر آ رہا ہے۔ انھوں نے امریکہ کے ساتھ معاہدے پر دستخط کرنے کے بعد بین الاقوامی فورسز پر حملے بند کر دیے، لیکن افغان حکومت کے خلاف جنگ جاری رکھی۔ تاہم حاجی حکمت اصرار کرتے ہیں کہ اس میں کوئی تضاد نہیں ہے۔ ’ہم ایک اسلامی حکومت چاہتے ہیں جو شریعت کے مطابق حکومت کرے۔ ہم اس وقت تک اپنا جہاد جاری رکھیں گے جب تک کہ وہ ہمارے مطالبات قبول نہیں کرتے۔‘

اس سوال کے جواب پر کہ کیا طالبان دوسرے افغان سیاسی دھڑوں کے ساتھ اقتدار میں حصہ لینے پر راضی ہوں گے، حاجی حکمت قطر میں گروپ کی سیاسی قیادت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بار بار کہتے رہے کہ ’وہ جو بھی فیصلہ کریں گے وہ ہمیں قبول ہو گا۔‘

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.