انٹرنیشنل

ہزاروں افراد کو پھانسی کی سزا دینے والا کردار بھی منظر عام سے غائب، جلاد کی موت کیسے ہو گئی؟ المناک حقیقت سامنے آنے کے بعد پورے شہر میں خاموشی چھا گئی

عشماوی نے اپنی ملازمت کے دوران1070 قیدیوں کی سزائے موت کے فیصلے پر عملدرآمد کروایا ان میں 20 فیصد وہ خواتین بھی شامل ہیں

ہزاروں افراد کو پھانسی کی سزا دینے والا کردار بھی منظر عام سے غائب، جلاد کی موت کیسے ہو گئی؟ المناک حقیقت سامنے آنے کے بعد پورے شہر میں خاموشی چھا گئی ہے

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق دو دہائیوں تک قیدیوں کو موت کی ابدی نیند سلانے کی ملازمت سے وابستہ عشماوی کو پھانسی کے مناظر انجام دینے کے لیے متعدد فلموں اور سیریز میں بھی استعمال کیا گیا۔ عشماوی نے اپنی ملازمت کے دوران جن 1070 قیدیوں کی سزائے موت کے فیصلے پر عملدرآمد کروایا ان میں 20 فیصد وہ خواتین بھی شامل ہیں جنہوں نے اپنے شوہروں کو قتل کیا۔ زیادہ قیدیوں کو موت کے گھاٹ اتارنے پر عشماوی کا نام گینز بک میں بھی شامل کیا گیا تھا۔واضح رہے کہ عشماوی کا شمار مصر کے مشہور جلادوں میں ہوتا تھا جس نے سزائے موت کے 1070 قیدیوں کو موت کی سزا پر عمل درآمد کراتے ہوئے انہیں منطقی انجام تک پہنچایا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads. because we hate them too.