انٹرنیشنل

مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث تنظیم کے سربراہ نے ترک سیاست میں ہنگامہ کیسے برپا کر دیا؟ سب کچھ کھل کر سامنے آگیا، پوری دنیا میں تہلکہ مچا دینے والی خبر

سیدت پیکر نے ان ویڈیوز میں متعدد ترک اعلی سطحی حاضر سروس اور سابق حکومتی اہلکاروں پر جرائم میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا

مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث تنظیم کے سربراہ نے ترک سیاست میں ہنگامہ کیسے برپا کر دیا؟ سب کچھ کھل کر سامنے آگیا، پوری دنیا میں تہلکہ مچا دینے والی خبر آگئی۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق ترکی میں ماضی میں سزا پانے والے ایک مجرمانہ تنظیم کے سربراہ سیدت پیکر کی دو مئی کو یوٹیوب پر جاری ہونے والی ویڈیوز نے ترک سیاست میں تہلکہ مچا دیا ہے۔ سیدت پیکر نے ان ویڈیوز میں متعدد ترک اعلی سطحی حاضر سروس اور سابق حکومتی اہلکاروں پر جرائم میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا ہے۔ سیدت پیکر کا کہنا ہے کہ وہ متحدہ عرب امارات میں موجود ہیں۔ انھوں نے اپنے یوٹیوب اکانٹ سے سات ویڈیوز جاری کی ہیں جن کو لاکھوں بار دیکھا جا چکا ہے۔ انھوں نے اہلکاروں پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ منشیات فروشی، تاوان، ریپ، اور قتل جیسے جرائم میں ملوث ہیں جس کے بعد ملک میں ریاستی عناصر، مجرمانہ گروہوں اور میڈیا کے درمیان تعلقات پر سوالات اٹھنے لگے ہیں۔ اس سارے معاملے کے مرکز پر ملک کے جارحانہ انداز رکھنے والے وزیرِ داخلہ سلیمان سولو ہیں جس کی وجہ سے ملک میں سیاسی تنا بڑھ گیا ہے۔ حکام نے پیکر کے الزامات کی تردید کی تاہم ان ویڈیوز نے ترکی میں سیاسی صف بندی کے بارے میں چہم گوئیاں شروع کر دی ہیں۔

سیدت پیکر 1990 کی دہائی میں ترکی میں انڈر ورلڈ کے ایک معروف شخص کے طور پر سامنے آئے تھے اور انھیں متعدد بار جیل کی سزا سنائی جا چکی ہے اور ان کے جرائم میں اقدامِ قتل، دھمکیاں، اور ایک منظم مجرمانہ تنظیم بنانا شامل ہیں۔ 2014 میں جیل سے اپنی رہائی کے بعد انھوں نے خود کو ایک کاروباری شخصیت کے طور پر پیش کیا جو فلاحی کاموں میں پیش پیش ہو۔ 2016 میں سیدت پیکر ایک دفعہ پھر منظرِ عام پر آ گئے جب انھوں نے چند پروفیسروں کی جانب سے ملک کے جنوب مشرق میں کردوں کے خلاف سکیورٹی آپریشنز کی تنقید کے بعد ان کے خون کی بارش کی دھمکی دی۔ 2020 میں انھوں نے اعلان کیا کہ وہ تعلیم اور کاروباری سرگرمیوں کے لیے بیرونِ ملک جا رہے ہیں اور انھوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ انھیں سابق وزیر خزانہ اور صدر اردوغان کے داماد بیرت البیرک نشانہ بنا رہے ہیں۔ البیرک نے ان الزامات کا کوئی جواب نہیں دیا۔ پیکر نے ماضی میں صدر اردوغان کی حمایت میں ریلیوں کا بھی انتظام کیا ہے اور اپنی ویڈیوز میں وہ قوم پرستی اور ریاستی پالیسیوں پر زور دیتے ہیں۔ وہ اپنی ویڈیوز میں تاریخی شخصیات کا حوالہ دیتے ہیں اور آخر میں بین الترک نظریات کی تائید کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.