انٹرنیشنل

عام شہریوں کی ہلاکت،امریکی افواج نےغلطی کا اعتراف کرلیا

پینٹاگون کی رپورٹ کےمطابق امریکی کارروائیوں کےنتیجےمیں 10 عام شہری زخمی بھی ہوئے

امریکا نےگزشتہ سال 2020 میں دنیا بھرمیں فوجی کارروائیوں کےنتیجےمیں 23 عام شہریوں کی ہلاکت کا اعتراف کرلیا ہے۔ پینٹاگون نے اپنی رپورٹ میں گزشتہ سال دنیا بھرمیں امریکی فوجی کارروائیوں کےنتیجےمیں 23 عام شہریوں کی ہلاکت کا اعتراف کیا ہےتاہم یہ اموات غیرارادی طورپرہوئیں جب کہ امریکی افواج کےہاتھوں مارے جانےوالےافراد کا تعلق عراق،افغانستان،صومالیہ،یمن اورنائیجیریا سےتھا۔

پینٹاگون کی رپورٹ کےمطابق امریکی کارروائیوں کےنتیجےمیں 10 عام شہری زخمی بھی ہوئےجب کہ مارے جانےوالےزیادہ ترافراد کا تعلق افغانستان سےتھا،رپورٹ میں کہا گیا ہےکہ کانگریس نےپینٹاگون کوہلاک افراد کےاہل خانہ کومعاوضہ کےطورپردینےکےلیے 3 ملین ڈالرکی رقم دی تھی تاہم جوابھی تک ادا نہیں کی گئی۔

دوسری جانب این جی اوکا کہنا ہے کہ امریکی حملوں میں مارے جانےوالےعام شہریوں کی تعداد پینٹاگون کی جانب سےجاری اعدادوشمار سےکہیں زیادہ ہے،دنیا بھرمیں امریکی حملوں کےنتیجےمیں تقریباً 102 عام شہری مارے گئےہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.