انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

کورونا متاثرین کے لئے تیار کی گئی ویکسین کے خلاف گمراہ کن خبریں پھیلانے کا لازم، ٹوئٹر نے امریکی مصنفہ کو نشان عبرت بنا دیا، سب حیران

ٹوئٹر نے کووڈ ویکسین کے خلاف غلط خبریں پھیلانے پر امریکی مصنفہ نامی وولف کا ٹوئٹر اکاؤنٹ معطل کر دیا ہے

کورونا متاثرین کے لئے تیار کی گئی ویکسین کے خلاف گمراہ کن خبریں پھیلانے کا لازم، ٹوئٹر نے امریکی مصنفہ کو نشان عبرت بنا دیا، سب حیران رہ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر نامی وولف نے بغیر تصدیق کے ٹویٹ کیے اور ان میں سے ایک وہ بھی شامل ہے جس میں بالغوں کے بننے والی فلموں کے ایک امریکی اداکار ڈاکٹر کے روپ میں کھڑا ہے۔ ٹوئٹر پر کئی لوگوں نے ڈاکٹر نامی وولف کے اکانٹ کی معطلی کو اچھا فیصلہ قرار دیا ہے۔ پروفسیر گیون یامے نے ٹویٹ کیا کہ وہ بہت خوش ہیں۔ انھوں نے ڈاکٹر نامی وولف کے ٹویٹس کو انتہائی خوفناک، خطرناک اور فضول قرار دیا ہے۔ تاہم کچھ ایسے صارفین بھی ہیں جنھوں نے ڈاکٹر نامی وولف کے اکانٹ کی معطلی پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ آزادی اظہار رائے کو دبانے کے مترادف ہے۔

ٹوئٹر نے کووڈ ویکسین کے خلاف غلط خبریں پھیلانے پر امریکی مصنفہ نامی وولف کا ٹوئٹر اکاؤنٹ معطل کر دیا ہے۔ ڈاکٹر نومی وولف نے کووڈ وائرس کی تیسری لہر کے دوران دی بیوٹی متھ نامی کتاب سے شہرت حاصل کی ہے۔ انھوں نے کووڈ ویکسین سے متعلق بڑی تعداد میں بے بنیاد اور سازشی نظریات کو بھی خوب ترویج دی ہے۔ ایک ٹویٹ میں کہا گیا تھا کہ ویکسین ایک سوفٹ ویئر پلیٹ فارم ہے جو اپ لوڈ کے نوٹیفیکیشن موصول کر سکتا ہے۔ انھوں نے اپنے ایک لاکھ اور 40 ہزار سے زائد فالورز کے سامنے امریکہ کے کووڈ پر ایڈوائرز ڈاکٹر انتھونی فاچی کا موازنہ شیطان سے کیا۔ اپنے ایک تازہ ترین ٹویٹ میں انھوں نے کہا کہ ایسے لوگ جنھوں نے ویکسین لگوائی ہے ان کے پیشاب کو بھی نکاسی کی عام سپلائی سے علیحدہ کرنے کی ضرورت ہے۔ جبکہ پینے کے پانی کے ذریعے ایسے لوگوں پر اس کے اثرات کا مشاہدہ کیا گیا ہے جنھوں نے ویکسین نہیں لگوائی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.