انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

پنجشیر میں مختلف اطراف سے طالبان کی پیش قدمی شروع، جنگ کے بادل ایک بار پھرمنڈلانے لگے، ہر طرف خوف وہراس کی فضا پھیلنے لگ لگا

وادی میں داخلے کے وقت کسی مزاحمت کا سامنا نہیں کرنا پڑا تاہم وادی پنجشیر کی مزاحمتی فورس کے رکن نے طالبان کے ان دعوؤں کی تردید کی ہے

پنجشیر میں مختلف اطراف سے طالبان کی پیش قدمی شروع، جنگ کے بادل ایک بار پھرمنڈلانے لگے، ہر طرف خوف وہراس کی فضا پھیلنے لگ گئی ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا رپورٹس کے مطابق طالبان اور وادی پنجشیر کے معززین کے درمیان مذاکرات جاری ہیں اور اب تک کوئی بریک تھرو نہیں ہوا ہے۔ دوسری جانب طالبان نے ایک بار پھر وادی پنجشیر میں پیش قدمی کی ہے اور طالبان جنگجوؤں نے وادی سے متصل پہاڑوں اور چوٹیوں پر مورچے قائم کرلیے ہیں۔ افغان میڈیا رپورٹس کے مطابق طالبان نے دعوی کیا ہے کہ جنگجوؤں کے دستے مختلف سمتوں سے وادی پنجشیر میں داخل ہوگئے ہیں۔ طالبان کے ثقافتی کمیشن کے رکن امان اللہ کا کہنا تھاکہ وادی میں داخلے کے وقت کسی مزاحمت کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔ تاہم وادی پنجشیر کی مزاحمتی فورس کے رکن نے طالبان کے ان دعوؤں کی تردید کی ہے۔ مزاحمتی فورس کے مذاکراتی وفد کے رکن محمد الماس زاہد نے بتایا کہ پنجشیر میں کوئی لڑائی نہیں ہوئی اور نہ ہی کوئی داخل ہوسکا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر مذاکرات ناکام ہوئے تو سنگین نتائج سامنے آئیں گے، اس سے جنگ اور غیرملکی مداخلت کا راستہ کھلے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.