انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

ناروے حکام نے سیاحوں پر ایک انوکھی پابندی لگائی، روس کی طرف منہ کر کے پیشاب کرنے کو جرم قرار دیدیا، لاکھوں کا جرمانہ عائد کرنے کا بھی اعلان کر دیا

سائن حکام نے دریا کے کنارے سے گزرنے والے لوگوں کو اس اشتعال انگیز اقدام سے روکنے کے لیے دانستہ طور پر نصب کیا گیا ہے

ناروے حکام نے سیاحوں پر ایک انوکھی پابندی لگائی، روس کی طرف منہ کر کے پیشاب کرنے کو جرم قرار دیدیا، لاکھوں کا جرمانہ عائد کرنے کا بھی اعلان کر دیا ہے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق ناروے حکام نے سیاحوں پر ایک انوکھی پابندی لگائی ہے جس کے تحت روس کی طرف منہ کرکے پیشاپ کرنے کوجرم قراردیتے ہوئے خلاف ورزی کرنے والوں پر290یورو جرمانہ عائدکرنے کا اعلان کیا ہے۔ ناروے اور روس کی سرحد پر واقع دریائے ژاقوبسیلوا ناروے آنے والے سیاحوں کی توجہ کا مرکز ہوتا ہے لیکن اب ناروے کے حکام نے دریا کے کنارے ایک بورڈ نصب کیا جس پر سیاحوں کو روس کی جانب پیشاب کرنے سے منع کرنے کی تحریر درج ہے۔

ناروے کے حکام نے نہ صرف سیاحوں اور مقامی افراد کو دریا کے کنارے روس کی طرف منہ کر کے پیشاب کرنے کے عمل کو اشتعال انگیز اور ممنوع قرار دیا ہے بلکہ ان احکامات کی خلاف ورزی کرنے والوں پر جرمانہ بھی عائد کیا جا سکتا ہے. خلاف ورزی کرنے پر تین ہزار نارویجیئن کرونا کا بھاری جرمانہ عائد کیا جا سکتا ہے یہ رقم 290 یورو یا قریب 340 ڈالر کے مساوی ہے دریائے ژاکوبسلیوا کا ناروے کی طرف کا کنارہ سیاحت کا مرکز ہے۔

انگریزی زبان میں جلی حروف میں درج کی گئی تحریر کی تصویر ایک سیاح نے سوشل میڈیا پر پوسٹ کر دی جس کے بعد ناروے میں بحث شروع ہو گئی روس اور ناروے کے مابین سرحد دریائے ژاکوبسلیوا ہے جس کے کنارے پر ناروی نجن حکام نے سائن بورڈ پر نصب کردیا ہے جس پر تحریر ہے کہ روس کی طرف منہ کر کے پیشاب کرنا منع ہے۔ ناروے کے بارڈر کمشنر ینس آرنے ہوئیلونڈ نے تصدیق کی کہ سوشل میڈیا پر موضوع بحث بننے والا سائن بورڈ سرکاری طور پر ہی آویزاں کیا گیا ہے انہوں نے بتایا کہ یہ سائن حکام نے دریا کے کنارے سے گزرنے والے لوگوں کو اس اشتعال انگیز اقدام سے روکنے کے لیے دانستہ طور پر نصب کیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.