انٹرنیشنلفیچرڈ پوسٹ

میریٹل ریپ، جب شوہر زبردستی کرنے کی کوشش کرتا ہے تو کیا بیوی کو نا کہنے کا قانون حق حاصل ہے؟ چلچلاتی معاشرتی کہانی سامنے آنے پر سب حیران رہ گئے

دنیا کے 50 سے زائد ممالک میں میریٹل ریپ کو جرم سمجھا جاتا ہے اور ان ممالک کے قوانین میں اس جرم کی باقاعدہ سزائیں موجود ہیں

میریٹل ریپ، جب شوہر زبردستی کرنے کی کوشش کرتا ہے تو کیا بیوی کو نا کہنے کا قانون حق حاصل ہے؟ چلچلاتی معاشرتی کہانی سامنے آنے پر سب حیران رہ گئے۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق کیا میاں بیوی کے درمیان ریپ ہو سکتا ہے؟ اب یہ سوال انڈیا کی سپریم کورٹ کے سامنے ہے۔ دہلی ہائی کورٹ نے جب میریٹل ریپ کو غیر قانونی قرار دینے کی درخواست پر سنوائی کی تھی تو اس معاملے پر اتفاق نہیں ہو سکا تھا کیونکہ اس کیس کی سماعت کرنے والے دو رکنی بینچ کے جج شکدھر نے میریٹل ریپ کو غیر قانونی کہا تھا تاہم جج شنکر اس سے متفق نہیں تھے۔ اب ایک درخواست گزار نے اس معاملے میں سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی ہے۔ شادی ایک خوبصورت اور پیار بھرا رشتہ ہو سکتا ہے تاہم کچھ معاملات میں یہ ذہنی اور جسمانی اذیت کے ساتھ ایک انتہائی مشکل رشتہ بھی ثابت ہو سکتا ہے۔

ایسا گھریلو تشدد جو جنسی تعلق میں بھی شامل ہو اور شوہر اپنی بیوی کے انکار کے باوجود اسے جنسی تعلقات قائم کرنے پر مجبور کرے تو اسے میریٹل ریپ کہا جاتا ہے۔ دنیا کے 50 سے زائد ممالک میں میریٹل ریپ کو جرم سمجھا جاتا ہے اور ان ممالک کے قوانین میں اس جرم کی باقاعدہ سزائیں موجود ہیں۔ سنہ 2012 میں انڈیا میں چلتی بس میں ایک طالبہ کے ساتھ اجتماعی ریپ کے بعد جب خواتین کے خلاف تشدد کے قوانین کو مضبوط بنانے کے لیے جسٹس ورما کمیٹی بنائی گئی تھی اس کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں میریٹل ریپ کو غیر قانونی قرار دینے کی سفارش کی تھی لیکن حکومت نے اسے قبول نہیں کیا تھا۔ دہلی ہائی کورٹ میں موجودہ عرضیوں پر حکومت نے اپنی رائے واضح نہیں کی ہے لیکن بحث کے دوران کئی دلائل سامنے آئے ہیں۔ مثال کے طور پر، میریٹل ریپ کو جرم سمجھنا شادیوں کو ٹوٹنے کا باعث بنے گا، خواتین اپنے شوہروں کو ہراساں کرنے کے لیے اس قانون کا غلط استعمال کریں گی اور یہ کہ گھریلو تشدد کے لیے پہلے سے قانون موجود ہیں وغیرہ، وغیرہ۔

میریٹل ریپ پر جاری تنازع کے درمیان وزیر سمرتی ایرانی کا کہنا تھا کہ ان خدشات اور شکوک و شبہات کو بہتر طور پر سمجھنے کے لیے میں نے ان ممالک کے تجربات کو جاننے کی کوشش کی جہاں میریٹل ریپ غیر قانونی ہے۔ میں نے دو ممالک اور چار سوالات کا انتخاب کیا۔ پہلا نیپال ہے جو میریٹل ریپ پر قانون سازی کرنے والا واحد جنوبی ایشیائی ملک ہے اور جو ثقافتی طور پر انڈیا سے قریب ہے اور برطانیہ اپنی نوآبادیاتی تاریخ کی وجہ سے انڈیا کے قریب ہے جس کے قوانین کی بنیاد پر انڈیا کے بہت سے قوانین بنائے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.