انٹرنیشنل

روسی سائنسدان ڈاکٹر ایلگزینڈر شیپلیوک غداری کے الزام میں گرفتار

ڈاکٹر ایلگزینڈر شیپلیوک انسٹیٹیوٹ آف تھیوریٹیکل اینڈ اپلائیڈ مکینکس آف رشین اکیڈمی کی سائبیریا برانچ میں بطور ڈائریکٹر تعینات تھے

روس کے ہائپر سونک میزائل پروجیکٹ سے وابستہ نامور روسی سائنسدان ڈاکٹر ایلگزینڈر شیپلیوک کو غداری کے الزام میں گرفتار کر کے ایک نیا ہنگامہ برپا کر دیا ۔

انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق ڈاکٹر ایلگزینڈر شیپلیوک انسٹیٹیوٹ آف تھیوریٹیکل اینڈ اپلائیڈ مکینکس آف رشین اکیڈمی کی سائبیریا برانچ میں بطور ڈائریکٹر تعینات تھے۔ ڈاکٹر ایلگزینڈر کی گرفتاری سے قبل رواں برس مزید دو روسی سائنسدانوں کو بھی غداری کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ 27 جون کو ادارے کے چیف ریسرچر ایناتولی میسلوو کو پر ہائپر سونک میزائل سے متعلق خفیہ معلومات منتقل کرنے پر غداری کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا، ڈاکٹر ایلگزینڈر کی گرفتاری کو اسی گرفتاری سے جوڑا جا رہا ہے۔ انسٹیٹیوٹ کی ویبسائیٹ کے مطابق ڈاکٹر ایلگزینڈر ہائپر سونک کنڈیشنز پیدا کرنے کیلئے خصوصی طور پر قائم کی گئی منفرد ونڈ ٹنل لیبارٹری کے سربراہ تھے، جبکہ 30 جون کو رشین اکیڈمی آف سائنس کی سائبیرین برانچ ہی کے انسٹیٹیوٹ آف لیزر فزکس سے منسلک ریسرچر دمیتری کالکر کو بھی غداری کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا، ان پر الزام تھا کہ انہوں نے چینی سکیورٹی سروسز سے کو خفیہ معلومات فراہم کی تھی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.