انٹرنیشنل

یونیورسٹی طالبات کی نازیبا ویڈیو وائرل ہونے پر لڑکیوں کی مبینہ طور پر خود کشی کی کوشش

طالبات نے ویڈیو بنانیوالی لڑکی کو رنگے ہاتھوں پکڑا جس کے بعد یہ معاملہ سامنے آیا اور واقعے کے بعد8لڑکیوں نے مبینہ طور پر خودکشی کی کوشش کی

بھارت کے شہرچندی گڑھ میں یونیورسٹی کی طالبات کی نازیبا ویڈیوز وائرل ہونے پر 8 لڑکیوں نے مبینہ طور پر خودکشی کی کوشش کی جبکہ 60 سے زائد طالبات کی نازیبا ویڈیو بنائی گئی تھی۔

انٹرنیشنل میڈیا رپورٹس کے مطابق موہالی میں قائم نجی یونیورسٹی میں ساتھی طالبہ کی جانب سے مختلف اوقات میں 60 سے زائد طالبات کی نازیبا ویڈیوز بنا کر بوائے فرینڈ کو بھیجنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔ رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ طالبات نے ویڈیو بنانے والی لڑکی کو رنگے ہاتھوں پکڑا جس کے بعد یہ معاملہ سامنے آیا اور واقعے کے بعد8لڑکیوں نے مبینہ طور پر خودکشی کی کوشش کی اور کئی کی حالت تشویشناک ہے۔ رپورٹس کے مطابق یونیورسٹی کیمپس میں طلبہ نے شدید احتجاج کیا اور انتظامیہ کے خلاف دھرنا بھی دیا اور الزام لگایا کہ یونیورسٹی انتظامیہ معاملے کو دبا رہی ہے۔ طلبہ کے احتجاج کے باعث یونیورسٹی انتظامیہ کو پولیس کو طلب کرنا پڑا اور اس دوران پولیس نے طلبہ پر لاٹھی چارج بھی کیا۔

دوسری جانب پولیس اور یونیورسٹی انتظامیہ نے لڑکیوں کی مبینہ خودکشی کو افواہ قرار دیا تاہم رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ خودکشی کی کوشش کرنے والی طالبات کو مختلف اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے۔ ادھر ساتھی لڑکیوں کی ویڈیوزبنانے والی طالبہ نے نازیباویڈیوزبنانے کا اعتراف کرلیا ہے اور پولیس نے لڑکی سے تفتیش شروع کردی ہے۔ رپورٹس کے مطابق طالبہ بھارتی سیاحتی شہر شِملہ میں رہنے والے اپنے دوست کو ویڈیوز بنا کر بھیجا کرتی تھی جس کے ثبوت بھی فون سے حاصل کرلیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.