کھوج بلاگ

مذاق کے نام پر لوگوں کی دل آزاری کرنا بند کیجئے

ٹی وی پر نہایت مہذب نظر آنے والی خواتین حقیقیت میں بالکل مختلف ہیں۔ انہیں نہ تو کسی کی شرم ہے نہ لحاظ

المیہ تو یہ ہے کہ ہمارے ملک کی کچھ مشہور شخصیات نہ صرف عقل سےپیدل ہیں بلکہ لوگ انہیں بڑی تعداد میں فالو کرتے ہیں اوران کی کہی ہوئی ایک ایک بات پراندھوں کی طرح اعتباربھی کرتےہیں۔ حال ہی میں سوشل میڈیا پرایک ویڈیودیکھی جس میں مارننگ شوکی ایک سابق میزبان ایک عمررسیدہ خاتون کا مذاق اڑا رہی تھی۔ یہ ویڈیو دیکھ کر میں اپنےغصےپرقابو نہیں رکھ سکی اورخاتون سےسوال پوچھنےکا دل کیا کہ کیا اس کےپاس عقل اورشرم نام کی کوئی چیز ہےیا یہ چیزیں ان محترمہ کےقریب سےبھی نہیں گزریں۔

دلچسپ بات تو یہ ہےکہ مارننگ شوکی یہ میزبان جوویڈیومیں عمررسیدہ خاتون کا مذاق اڑا رہی تھی،کوئی غیر معروف شخصیت نہیں بلکہ انہیں مارننگ شوز کی کوئین کہا جاتا ہے، جنہوں نے ایک عرصے تک مارننگ شوزپرراج کیا ہے۔ افسوس کا مقام تو یہ ہےکہ برسوں سےمارننگ شوزکےذریعےصرف گھریلوخواتین پراپنا علم جھاڑنےوالی ان نام نہاد میزبانوں کوشاید خود بھی نہیں پتہ کہ ان کےپاس عقل نام کی کوئی چیزسرے سےہےہی نہیں۔

میرا مارننگ شوز سے کوئی تنازع نہیں لیکن مجھے صبح صبح مارننگ شوزکےنام پرسجنے والے اس چڑیا گھرمیں کوئی دلچسپی بھی نہیں ہے۔ اس لیے میں مارننگ شوز دیکھ کر اپنا وقت برباد کرنے کے بجائے کوئی معقول کام کرنا پسند کرتی ہوں۔ مجھے تو دراصل اعتراض مارننگ شوز کی اُن میزبانوں پر ہے جو تقریباً ہرچینل پرصبح صبح بھاری میک اپ کرکے کسی ڈیزائنرکے بھیجے ہوئے کپڑے پہن کرلوگوں کا دن خراب کرنےآجاتی ہیں۔

سونے پہ سہاگہ یہ خود کو عقلِ کُل بھی سمجھتی ہیں کیونکہ ان کے نزدیک یہ ہر موضوع پر بنا رُکے طویل گفتگو کرسکتی ہیں، اب چاہے انہیں کسی موضوع کے بارے میں ٹھیک سے معلومات ہوں یا نہ ہو لیکن اس سے کسی کو کیا فرق پڑتا ہے، ان کے نزدیک تو بس بولنا آنا چاہئے۔

مارننگ شوز کی میزبانوں کی عقل ان کے دماغ کے بجائے کہاں ہے اس کا اندازہ تو ایک محترمہ کی اس ویڈیو کو دیکھ کر ہی ہوگیا تھا جنہیں فارمولا ون کار کے بارے میں ککھ معلومات نہیں تھیں لیکن پھر بھی انہوں نے ٹیکنالوجی کے اس موضوع پر بنا رُکے ایسی سیر حاصل گفتگو کی کہ پوری دنیا ان کے علم اور معلومات کی قائل ہوگئی۔

اور اب ایک اور مارننگ شو کی میزبان کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے، جس میں وہ پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن شرمیلا فاروقی کی والدہ انیسہ فاروقی کا نہایت دیدہ دلیری سے مذاق اڑا رہی ہیں اور وہ بھی بغیر کسی شرم لحاظ کے۔ مذاق اڑانے والی خاتون اور کوئی نہیں بلکہ نادیہ خان ہیں جو مختلف چینلز کے مارننگ شوز کی میزبانی کرچکی ہیں۔

نادیہ خان، میڈم انیسہ فاروقی سے ان کے میک اپ کے حوالے سے پوچھتی ہیں کہ میڈم آپ کا میک اپ کون کرتا ہے اتنا حسین… یہ سوال پوچھتے ہوئے نادیہ خان کا لہجہ انتہائی ہتک آمیز اور تمسخر اڑانے والا تھا، جسے مجھ سمیت کئی سوشل میڈیا صارفین نے بھی باآسانی محسوس کیا۔ جب کہ انیسہ فاروقی نادیہ خان کا مذاق سمجھ ہی نہیں سکیں اور بھولپن میں انہیں جواب دیتی رہیں۔

ہم لوگ اس دور میں جی رہے ہیں جہاں کسی کی جسمانی ساخت کے بارے میں معمولی سا تبصرہ کرنے یا پھر کسی کی شکل و صورت اور رنگت کے بارے میں تبصرہ کرنے کو ’’باڈی شیمنگ‘‘ تصور کیا جاتا ہے اور اس باڈی شیمنگ کے خلاف مارننگ شوز کی یہی میزبان خواتین سب سے زیادہ چیختی ہوئی نظر آتی ہیں۔ لیکن ٹی وی پر نہایت مہذب نظر آنے والی یہ خواتین حقیقیت میں بالکل مختلف ہیں۔ انہیں نہ تو کسی کی شرم ہے نہ لحاظ۔

شرمیلا فاروقی نے نادیہ خان کی اس گھٹیا حرکت پر ان کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ کیا ہے جو میرے نزدیک بالکل صحیح اقدام ہے کیونکہ اس عورت کو یہ بھی شرم نہیں کہ وہ جس خاتون کا مذاق اڑا رہی تھی وہ اس سے عمر میں بڑی ہیں۔ جب ویڈیو میں یہ عورتیں اپنی حرکتوں سے باز نہیں آرہیں تو نجانے اصل زندگی میں ان کے مذاق سے کون محفوظ ہوتا ہوگا۔

اپنی بے ہودہ عادتوں کو مذاق کا نام دینے والی ان سوشل میڈیا انفلوئنسرز کو خود کو لگام دینے کی ضرورت ہے کیونکہ ہر چیز مذاق نہیں ہوتی اور اگر یہ خود پر قابو نہیں رکھ سکتیں تو انہیں میڈیا اور سوشل میڈیا کی بااثر شخصیات بننے کا بھی کوئی حق نہیں، کیونکہ لاکھوں لوگ ان نام نہاد انفلوئنسرز کو فالو کرتے ہیں اور ان کی کہی ہوئی بات پر آنکھیں بند کرکے اعتبار کرتے ہیں جو میرے نزدیک انتہائی خطرناک رجحان ہے۔

بشکریہ : زنیرہ ضیاء ، روزنامہ ایکسپریس

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.