پاکستان

جسٹس بابر ستار فیملی کی خفیہ معلومات لیک، خفیہ اداروں کو نوٹس جاری

کوئی اپروچ کرنیکی کوشش بھی کریگا تو ہائی آفس تک توہین عدالت کارروائی ہوگی' کچھ ٹوئٹر اکاؤنٹس سے یہ ڈیٹا اپ لوڈکیا گیا اوربدنیتی پر مبنی مہم چلائی گئی: جسٹس محسن اختر کیانی

اسلام آباد(کھوج نیوز) اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس بابر ستار کے خاندان کی خفیہ معلومات لیک کرنے پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے پیمرا اور دیگر اداروں کو نوٹس جاری کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس محسن اختر کیانی کی سربراہی میں جسٹس طارق محمود جہانگیری اور جسٹس سردار اعجاز اسحاق خان پر مبنی لارجر بینج نے کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے اٹارنی جنرل آفس، ایف آئی اے، آئی بی، آئی ایس آئی اور پیمرا کو نوٹس جاری کردیے، جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ ہم سب اداروں کو نوٹس کرکے رپورٹ منگوائیں گے۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ کوئی اپروچ کرنیکی کوشش بھی کریگا تو ہائی آفس تک توہین عدالت کارروائی ہوگی۔ جسٹس محسن کیانی نے کہا کہ کچھ ٹوئٹر اکاؤنٹس سے یہ ڈیٹا اپ لوڈکیا گیا اوربدنیتی پر مبنی مہم چلائی گئی، ایک جج جوکیس سن رہا ہے اس پر پریشر ڈالنے کے لیے یہ سب کیا جا رہا ہے۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے اسٹیٹ کونسل سیمکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ توہین عدالت کی کارروائی شروع کرنے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم سیکرٹری دفاع کو بھی نوٹس جاری کریں گے۔ بعد ازاں جسٹس بابر ستار کی فیملی کی خفیہ معلومات لیک کرنے پر توہین عدالت کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی گئی۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیئے کہ ابھی کسی میں جرات نہیں ہے کہ جج کو اپروچ کرے، سب سے زیادہ تشویشناک یہ ہیکہ جج کی خفیہ معلومات لیک ہوئی ہیں، یا تو ریاست کے اداروں کے اکانٹس کو ہیک کیا ہے یا اسٹیٹ کے اداروں نے اس معلومات کو لیک کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایس آئی، آئی بی اور پی ٹی اے کے کردار کو دیکھنا ہے، یہ بالکل نہیں ہو سکتا کہ سوشل میڈیا یا پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا پریہ سب کچھ کیا جائے،کہہ دینا بڑا آسان ہے کہ ففتھ جنریشن وار فیئر ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button