پاکستان

حکومت کی ہٹ دھرمی، الیکشن کمیشن کھڈے لائن، آئین پاکستان کی دھجیاں اڑا دی گئیں

وزارت خزانہ نے نوٹیفکیشن کی کاپیاں بھیجتے ہوئے چیف الیکشن کمشنرکو سیریل نمبر 38 پر رکھا ہے جو نہ صرف توہین الیکشن کمیشن ہے بلکہ آئین پاکستان کی بھی دھجیاں اڑا دی گئی ہیں

اسلام آباد(رپورٹ : شکیلہ فاطمہ) حکومت کی ہٹ دھرمی، الیکشن کمیشن کھڈے لائن لگانے کی تیاریاں مکمل کرتے ہوئے وفاقی حکومت نے آئین پاکستان کی دھجیاں اڑا دی گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق فنانس ڈویژن نے گذشتہ روز وفاقی ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا جو نوٹیفکیشن جاری کیا ہے اس میں نہ صرف چیف الیکشن کمشنر، الیکشن کمیشن کو ڈی گریڈ کیا گیا بلکہ آئین پاکستان کو بھی ڈی گریڈ کیا گیا ہے۔ سرکاری خط و کتابت میں الیکشن کمیشن کا پروٹوکول پانچویں نمبر پر ہوتا ہے کیونکہ الیکشن کمیشن ایک آئینی ادارہ ہے اور آئین میں پورا چیپٹر 8 آرٹیکل213 سے لیکر 226 تک الیکشن کمیشن کے بارے ہے لیکن عجیب بات ہے کہ وزارت خزانہ نے نوٹیفکیشن کی کاپیاں بھیجتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر(Chairman Election Commission of Pakistan)کو سیریل نمبر 38 پر رکھا ہے جو نہ صرف توہین الیکشن کمیشن ہے بلکہ توہین آئین پاکستان بھی ہے۔ متعلقہ حکام اور ذمہ داران کو اسکا نوٹس لینا چاہیے کیونکہ ماضی میں کبھی کسی آئینی ادارے کے ساتھ اس طرح کا ہتک آمیز رویہ نہیں رکھا گیا۔ کسی غیر ملکی ادارے نے ہماری اعلی عدلیہ کو 140 نمبر پر رکھا لیکن ہماری اپنی وزارت خزانہ نے الیکشن کمیشن کو توہین آمیز رویہ کے ساتھ 38 نمبر پر لکھا۔ حالانکہ عام طور پر مخاطب سیکرٹری الیکشن کمیشن ہوتا ہے جیسے رجسٹرار سپریم کورٹ ہوتا ہے کبھی بھی چیف جسٹس کو مخاطب نہیں کیا جاتا اسی طرح الیکشن کمیشن کے بھی سیکرٹری کو مخاطب کیا جاتا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button