پاکستان

غیر معیاری نرسیں، سعودی عرب اور خلیجی ریاستوں نے پاکستان کو اہم پیغام دے دیا

ملک بھر میں صحت کے شعبے میں جعلی نرسنگ کالجزکے حوالے سے انکوائری کرنے اور وفاقی دارلحکومت کے ہسپتالوں میں صحت کی سہولیات بہتر بنانے کی سفارش کی ہے

اسلام آباد(کھوج نیوز) ایک طرف امریکا کو نرسیں بھیجنے کا معاہدہ تو دوسری طرف سعودی عرب اور خلیجی ریاستوں نے غیر معیاری نرسوں پر پاکستان کو اہم پیغام دے دیا جو حیران کن تھا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قومی صحت کمیٹی میں وزیر اعظم کے کوآرڈینیٹر برائے صحت ڈاکٹر مختار احمد نے انکشاف کیا ہے کہ سعودی عرب سمیت خلیجی ریاستوں نے پاکستانی نرسز کے معیار پر تحفظات کا اظہار کیا ہے اور معاملہ وزیر اعظم کے سامنے اٹھایا ہے۔ کمیٹی نے ملک بھر میں صحت کے شعبے میں جعلی نرسنگ کالجزکے حوالے سے انکوائری کرنے اور وفاقی دارلحکومت کے ہسپتالوں میں صحت کی سہولیات بہتر بنانے کی سفارش کی ہے۔

سیکرٹری صحت نے بتایا کہ رواں مالی سال 2024 – 25 کے لئے قومی صحت کیلئے 26ارب روپے کا بجٹ مختص کیا گیا ہے اجلاس کے دوران رکن کمیٹی ڈاکٹر ہماریون مہمند نے بتایاکہ چین اور وسط ایشیائی ریاستوں میں میڈیکل کی تعلیم حاصل کرنے والے پاکستانی ڈاکٹرز کو چین اور وسط ایشیائی ریاستوں میں پریکٹس کی اجازت نہیں ہے انہوں نے کہاکہ افسوس کا مقام ہے کہ جو ملک پیسے لے کر ہمارے بچے بچیوں کو ڈاکٹر کی ڈگری دے رہیں ، وہی ممالک ان کو اپنے ملکوں میں ڈاکٹر ماننے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ کوارڈینیٹر ہیلتھ ڈاکٹر مختار احمد نے بتایا کہ ایران اور جنوبی کوریا نے پاکستان کے این آئی ایچ کے طرز پر ادارے قائم کئے اوریہ دونوں ممالک ویکسین تیار کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ ہم کوشش کر رہے ہیں کہ این ائی ایچ میں نجی اور سرکاری شعبے کے تعاون سے ویکسین تیاری شروع کر سکیں۔ انہوں نے کہاکہ صحت سہولت پروگرام کے تحت اسلام اباد ، جی بی، اے جے کے اور تھرپارکر کے 25 لاکھ سے زائد ابادی کو خدمات فراہم کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ صحت سہولت پروگرام جاری رکھنے کے لئے تجاویز پر مشتمل سمری منظوری کے لئے بھجوائی ہوئی ہے پروگرام کے تحت غریب مریضوں کے علاج پر ستر فیصد اخراجات حکومت اور تیس فیصد مریض خود برداشت کرے گا ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button