پاکستان

پاور سیکٹر تباہی کے دہانے پر ، کاروباری اور صنعتی شخصیات کی چیخ و پکار، حکومت کو ”وختا” ڈال دیا

پاکستان کا پاور سیکٹر تباہی کی طرف بڑھ رہا ہے اور واحد امید مسابقتی تجارتی دو طرفہ کنٹریکٹ مارکیٹ (سی ٹی بی سی ایم) ریجیم کی طرف بڑھنا ہے

کراچی (کھوج نیوز) پاکستان میں پاور سیکٹر تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا ہے جس کے باعث کاروباری اور صنعتی شخصیات کی چیخ و پکار کی وجہ سے وفاقی حکومت کو ”وختا” ڈال گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کاروباری اور صنعتی برادری نے کہا ہے کہ پاکستان کا پاور سیکٹر تباہی کی طرف بڑھ رہا ہے اور واحد امید مسابقتی تجارتی دو طرفہ کنٹریکٹ مارکیٹ (سی ٹی بی سی ایم) ریجیم کی طرف بڑھنا ہے۔ معروف چیمبرز اور ایسوسی ایشنز کی جانب سے گفتگو کی گئی جن میں ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان کے سی ای او زبیر موتی والا، کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر تنویر احمد بیری ، کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری کے صدر جوہر علی قندھاری اور وائس چیئرمین ایف پی سی سی آئی اور چئیرمین اپٹما آصف انعام شامل تھے۔ پاکستان کے سرکردہ چیمبرز اور صنعتی ایسوسی ایشنز نے مسابقتی تجارتی دو طرفہ کنٹریکٹ مارکیٹ (CTBCM) نظام کے فوری نفاذ پر زور دیتے ہوئے بجلی کے بلک صارفین کو براہ راست جنریٹرز سے بجلی خریدنے کی ہمایت کی ہے ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button