پاکستان

پاکستان کا وفاقی بجٹ،آئی ایم ایف کا موقف بھی آگیا،نیا قرض ملنے کی راہ ہموار

آئی ایم ایف کےمطالبےپربجٹ میں تمام ٹیکس استثناء ختم کرنےکی تجویزدی گئی ہے

اسلام آباد(کھوج نیوز)پاکستان کا وفاقی بجٹ،آئی ایم ایف کا موقف بھی آگیا،نیا قرض ملنے کی راہ ہموارہو گئی ۔رپورٹ کے مطابق عالمی مالیاتی فنڈ ( آئی ایم ایف ) نےنئےمالی سال کےبجٹ پراطمینان کا اظہارکردیا۔ ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کےمطالبےپربجٹ میں تمام ٹیکس استثناء ختم کرنےکی تجویزدی گئی ہے۔ بجٹ میں 3 ہزار ارب روپے سے زائد کا ٹیکس استثناء ختم کرنے کی تجویز ہے۔ ٹیکس نیٹ میں توسیع کیلئے ایف بی آر کی انفورسمنٹ کو بڑھایا گیا۔

آئندہ مالی سال 3 ہزار 800 ارب روپے سے زائد ٹیکس محصولات حاصل کیے جائیں گے۔ حکومت کا آئی ایم ایف کی پیشگی شرائط پر عملدرآمد سے نیا پروگرام جلد طے ہونے اور آئی ایم ایف سے اسٹاف لیول معاہدہ جون میں طے پانے کا امکان ہے۔ آئی ایم ایف کے مطالبے پر تنخواہ دار طبقے پر انکم ٹیکس کو عالمی معیار کے مطابق کردیا گیا۔ آئی ایم ایف کی تجویز پر ٹیکس چوری روکنے کیلئے ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جائے گا۔ توانائی کی سبسڈیز محدود کر کے صارفین سے مکمل پیداواری لاگت وصول کی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق ائندہ مالی سال حکومتی بجلی کمپنیوں کی نجکاری اور پاور سیکٹر کو ڈی ریگولیٹ کیا جائے گا جبکہ حکومتی کمپنیوں کی نجکاری کو تیز کیا جائے گا۔ حکومتی کمپنیوں کو دوست عرب ممالک کی حکومتی کمپنیوں کے سپرد کیا جائے گا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ سیاسی جماعتیں آئی ایم ایف پروگرام پر سیاست نہیں کریں گی اور صوبائی حکومتیں بھی نئے پروگرام پر مکمل عملدرآمد کریں گی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button