پاکستانفیچرڈ پوسٹ

کورونا وائرس، ماسک غائب، حکومت مفلوج، عوام پریشان

ملک بھر میں پانچ روپے میں ملنے والا عام ماسک اب 35 روپے تک میں فروخت ہو رہا ہے

پاکستان میں کورونا وائرس کے پھیلنے کی افواہ کے بعد ملک بھر میں ماسک غائب ہونے کے بعد حکومت مفلوج ہوگئی ہے اور عوام کی پریشانی میں اضافہ ہوگیا ہے۔

پاکستان میں صحت کے حکام کی جانب سے کورونا وائرس کے دو کیسز کی تصدیق کے بعد صوبہ بلوچستان میں گرد و غبار اور فضائی آلودگی سے بچانے والے عام ماسک کی قلت بھی دیکھنے میں آ رہی ہے۔ ذرائع کے مطابق قلت کے باعث صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں تاجروں کا کہنا ہے کہ پانچ روپے میں ملنے والا عام ماسک اب 35 روپے تک میں فروخت ہو رہا ہے۔ تاجروں نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ اگر حکومت نے مارکیٹ میں ماسک کی دستیابی کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات نہیں کیے تو یہی ماسک شاید سو سے دو سو روپے میں بھی دستیاب نہ ہو۔

اگرچہ مارکیٹ میں دستیاب عام ماسک کورونا وائرس سے بچا میں سودمند نہیں ہوتا مگر پھر بھی کوئٹہ میں اس کی قیمت میں اضافے کی وجہ کورونا وائرس کے پاکستان میں پھیلنے کے خدشے کی پیش نظر عام صارفین کی جانب سے اس کی خریداری میں اضافہ بتائی جا رہی ہے۔ تاہم کوئٹہ میں تاجر ماسک کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافے کی ایک بڑی وجہ ماضی قریب میں اس ماسک کی چین کو برآمد بتا رہے ہیں۔ کوئٹہ میں ایک میڈیکل سٹور کے مالک شکیل احمد نے بتایا کہ پاکستان میں ماسک بنانے کا کوئی پلانٹ نہیں ہے اور زیادہ تر ماسک پاکستان میں چین سے امپورٹ ہو رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ چین میں کورونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد ماسک کو پاکستان کی مارکیٹ سے لوگوں نے اٹھانا شروع کیا اور واپس چین بھیجنا شروع کیا۔

Tags
Back to top button
Close