پاکستان

وزیراعظم کی ویڈیو کانفرنس میں عدم شرکت،اپوزیشن قصوروارقرار

عمران خان خوداپوزیشن لیڈرکی بات سننا چاہتے تھے لیکن تب میٹنگزشیڈیول ہوچکی تھیں

وزیراعظم کی ویڈیوکانفرنس میں عدم شرکت،اپوزیشن قصوروارقرار،وفاقی وزیربرائے منصوبہ بندی اسد عمرنےوزیراعظم عمران خان کی جانب سے پارلیمانی رہنماؤں کی ویڈیوکانفرنس چھوڑکرجانے کی وجہ بتادی ہے۔اسد عمرنے  بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ انکا رات گئے تک اورپھرصبح بھی اسپیکرسے رابطہ تھا اوراسپیکرقومی اسمبلی مسلسل اپوزیشن لیڈرسہبازشریف اوربلاول بھٹوسے رابطے میں تھے لیکن تب تک دونوں رہنماؤں نے پارلیمانی رہنماؤں کی کانفرنس میں شامل ہونے کی حامی نہیں بھری تھی۔اسد عمر نے بتایا کہ دونوں رہنما اپنی میٹنگزکی مصروفیت کا بتارہے تھے جس کے بعد وزیراعظم عمران خان کی تقریرشیڈیول کرکے انکی اگلی میٹنگزشیڈیول کردی گئیں اورپھردوپہر ساڑھے بارہ بجےبلاول بھٹونے اپنی شمولیت کنفرم کی اورڈیڑھ بجےشہبازشریف نے لیکن تب تک وزیراعظم کی میٹنگزشیڈیول ہوچکی تھیں حالانکہ وزیراعظم عمران خان خوداپوزیشن لیڈرکی بات سننا چاہتے تھے لیکن تب میٹنگزشیڈیول ہوچکی تھیں اوروزیراعظم کو یہ بھی معلوم نہیں تھا کہ دوسرے لیڈران میٹنگ میں شامل ہیں کیونکہ ویڈیو کانفرنس میں سکرین پراپنی تصویرنظرآتی ہے دوسروں کی نہیں اس لیےوزیراعظم اپنی تقریرکرکے اگلی میٹنگ کیلئے چلے گئے۔

یاد رہے کہ آج ویڈیو لنک کے ذریعے پارلیمانی رہنماوَں کا اجلاس ہوا۔ مسلم لیگ نکے رہنماشہبازشریف نے اسپیکرقومی اسمبلی سے سوال کیا کہ کیا اس میٹنگ میں وزیراعظم شریک ہیں؟وزیراعظم کے موجود نہ ہونے پراپوزیشن لیڈرشہبازشریف اورمسلم لیگ ن نے پارلیمانی رہنماؤں کی ویڈیو کانفرنس میں شرکت کے بعد احتجاجا واک آؤٹ کردیا۔ شہبازشریف نے کہا کہ ملک کواس وقت تاریخ کی سب سے بڑی وبا کا سامنا ہے اوروزیراعظم کی سنجیدگی کا یہ عالم ہے کہ وہ چلے گئے ہیں ،معذرت لیکن ہم اس طرح کانفرنس میں شرکت نہیں کرسکتے۔

Tags
Back to top button
Close