پاکستان

احساس کفالت پروگرام‘کروڑوں روپے کا فراڈ، کنٹریکٹرز کا بڑا اعلان

انتظامیہ اور سٹیک ہولڈرز میں ادائیگیوں پر ڈیڈ لاک ہونے سے کنٹریکٹرز نے شامیانے، جنریٹرز اور پانی کی ٹینکیاں ہٹا دی

لاہور میں احساس کفالت پروگرام میں کروڑوں کا فراڈ‘کنٹریکٹرز کو بھی کروڑوں روپے کی ادائیگیاں نہ ہونے پر انہوں نے اپنی محنت لینے کے لئے حکومت کیخلاف بڑا اعلان کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کورونا لاک ڈاؤن سے متاثرہ افراد کی امداد کے لئے 3 ماہ قبل شروع کیے گئے احساس کفالت پروگرام کے 35 میں 22 مراکز بند کر دئیے گئے ہیں۔ ان میں سے صرف 13 پوائنٹس بغیر سہولیات کے فعال ہیں جن میں بنگالی، شالیمار، والٹن، کاہنہ، گلاب دیوی،علی رضا آباد، وحدت روڈ، رائیونڈ، سنٹرل ماڈل سکول، سبزہ زار، ملتان روڈ، گرین ٹان شامل ہیں۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ جن پوائنٹس کو بند کیا گیا ہے ان میں تحصیل سٹی میں 6 مراکز سٹی ڈسٹرکٹ سکول مین جی ٹی روڈ، گورنمنٹ ماڈل سکول چمڑا منڈی، گورنمنٹ عائشہ ڈگری کالج ٹمبر مارکیٹ، سنٹرل ماڈل سکول ریٹیگن روڈ، ایل ڈی اے سکول فار بوائز سبزہ زار، سی ڈی جی گرلز ہائی سکول ملتان روڈ، تحصیل شالیمار میں 6 مراکز۔ گورنمنٹ بوائز ہائی سکول باغبانپورہ، گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول چونگی، سی ڈی جی ہائی سکول ہربنس پورہ، گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول جلو موڑ، تحصیل رائیونڈ میں 10 مراکز۔ گورنمنٹ ہائی سکول فار بوائز ملتان روڈ، گورنمنٹ ہائی سکول چوہنگ، گورنمنٹ ہائی سکول مراکہ، گورنمنٹ ہائی سکول آرائیاں پنڈ، گورنمنٹ ہائی سکول رائیونڈ سٹی، دفتر یونین کونسل 256 علی رضا آباد، گورنمنٹ پرائمری سکول موضع مانک رائیونڈ، تحصیل کینٹ میں 5 مراکز۔ گورنمنٹ ہائی سکول ہڈیارہ، مسلم ہائی سکول صدر بازار، گورنمنٹ ایلیمنٹری سکول برکی روڈ، گورنمنٹ ایلیمنٹری سکول نور پور، تحصیل ماڈل ٹان میں 8 مراکز۔ گورنمنٹ پائلٹ ہائی سکول وحدت روڈ، گورنمنٹ ہائی سکول ٹاؤن شپ، گورنمنٹ ہائی سکول گرین ٹاؤن، گورنمنٹ ہائی سکول کاہنہ، گورنمنٹ شہدا اے پی ایس ہائی سکول ماڈل ٹاؤن شامل ہیں۔

ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ انتظامیہ نے کنٹریکٹرز کی 32 کروڑ روپے کی ادائیگیاں نہیں کیں۔ انتظامیہ اور سٹیک ہولڈرز میں ادائیگیوں پر ڈیڈ لاک ہونے سے کنٹریکٹرز نے شامیانے، جنریٹرز اور پانی کی ٹینکیاں ہٹا دی ہیں جبکہ کنٹریکٹرز نے احساس کفالت پروگرام کی انتظامیہ سے کروڑوں روپے وصول کرنے کے لئے بڑا اعلان کرتے ہوئے احتساب بیورو (نیب) اور محکمہ اینٹی کرپشن سمیت دیگر اداروں سے رابطہ کرنے کی منصوبہ بندی مکمل کر لی ہے۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ادھر احساس کفالت مراکز میں سہولتیں نہ ہونے کی وجہ سے ضعیف مرد وخواتین نے کہا ہے کہ صبح آتے ہیں، شام ہو جاتی ہے۔ سخت گرمی میں پانی ہے نہ پنکھا، گھنٹوں کھڑے رکھنے کے بعد پیسے دئیے بغیر واپس بھجوا دیا جاتا ہے۔

Tags
Back to top button
Close