پاکستان

سعودی عرب سے تعلقات،وزیرخارجہ کا حیران کن دعویٰ

مخدوم شاہ محمود قریشی نےکہا ہےکہ سعودی عرب کی اعلیٰ قیادت جلد پاکستان آئے گی

وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نےکہا ہےکہ سعودی عرب کی اعلیٰ قیادت جلد پاکستان آئے گی، پاکستان اورسعودی عرب کےتعلقات اچھےہیں اوراچھےرہیں گے، وزیراعظم کےدورہ کےبعد تعلقات مزید مضبوط ہوں گے۔ انہوں نےملتان میں میڈیا سےگفتگو میں کہا کہ سعودی عرب کےساتھ پاکستان کےبڑے اچھےتعلقات ہیں۔ پاکستان اورسعودی عرب کےتعلقات اچھےرہےہیں اوراچھےرہیں گے۔ سعودی قیادت بھی پاکستان آئےگی اورہم بھیسعودی عرب جاتےرہیں گے۔ اس سےقبل رضا ہال ملتان میں42 ویں سالانہ حسینیہ کانفرنس سےخطاب کرتےہوئے مخدوم شاہ محمود قریشی نےکہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں آج عزاداری اورمحرم کےجلوسوں پرپابندی ہے۔

وہاں مذہبی آزادی پربھی قدغن ہےاورعید کی نمازکی بھی اجازت نہیں دی گئی تھی۔انسانی حقوق کےعلمبرداروں کومقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم کا نوٹس لینا ہوگا۔ مقبوضہ کشمیرکےعوام نےبتادیاکہ اب ان کی منزل جبرسےآزادی ہے۔ بھارت نےجس طرح کشمیریوں کی آوازدبائی وہ پوری دنیا نےدیکھا۔ مقبوضہ کشمیرمیں بلیک آوٹ مسلسل جاری ہے۔ کشمیری جفا کشوں نے بھارت کی ہرپیشکش ٹھکرا دی، کشمیریوں نےبھارت کو پیغام دے دیا کہ ہماری منزل آزادی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ اطمینان کی بات ہے کہ آج حضرت امام حسین ؓ کی یاد کورونا سے نجات کے ماحول میں منائی جارہی ہے۔ فرض کریں کہ آج اگرلاک ڈاؤن ہوتا توکیا صورتحال ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ ماہرین کے خدشے کےمطابق آج ملک میںکورونا متاثرین کی تعداد 20 لاکھ ہونی چاہیے تھی لیکن اللہ کا کرم ہوا اورآج پاکستان میں 91 فیصد وینٹی لیٹرزخالی ہیں، اسپتالوں میں خصوصی وارڈزپردباؤنہیں۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ ماہرین کورونا وائرس کنٹرول کرنے پرپاکستان کی کیس اسٹڈی کرنا چاہتے ہیں، کورونا کا خطرہ ابھی ٹلا نہیں ہمیں احتیاط کرنا ہوگی۔ خدشہ ہے کہ سردیوں میں کورونا کی دوسری لہر آسکتی ہے اس لیے احتیاط کرنا چاہیے۔ کراچی کی صورتحال پر گفتگو میں انہوں نے کہا کہ کراچی کے لیے دعا کریں، آج کراچی والے مشکلات سے دوچارہیں، وہاں سیوریج ،نکاسی اورپانی کا کوئی انتظام نہیں کیا گیا،کراچی میں انتظامیہ نے اپنی تجوریاں بھریں اورشہرکواس کے حال پرچھوڑدیا۔ کراچی میں کسی قسم کی کوئی منصوبہ بندی نہیں کی گئی۔

Back to top button