پاکستان

عدالت میں پیش نہیں ہوسکتا،نوازشریف کی درخواست

ایون فیلڈ اورالعزیزیہ ریفرنس میں اپیلوں پرسابق وزیراعظم نےحاضری سےاستثنیٰ کی درخواست دائرکردی

عدالت میں پیش نہیں ہوسکتا،نوازشریف کی درخواست،کھوج نیوزذرائع کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں ایون فیلڈ اورالعزیزیہ ریفرنس میں اپیلوں پرسابق وزیراعظم نوازشریف نےحاضری سےاستثنیٰ کی درخواست دائرکردی۔ سابق وزیراعظم نوازشریف نے درخواست میں موقف اپنایا ہےکہ بیماری کی وجہ سےبیرون ملک زیرعلاج ہوں،بیرون ملک ہونےکی وجہ سےپیش ہونا ممکن نہیں،عدالت سے استدعا ہےکہ ایون فیلڈ اورالعزیزیہ ریفرنس میں اپیلوں کی سماعت پرحاضری سےاستثنی دیا جائے۔ واضح رہے کہ ایون فیلڈ اورالعزیزیہ ریفرنس میں اسلام آبادہائیکورٹ کےجسٹس عامر فاروق اورجسٹس محسن اخترکیانی پرمشتمل بینچ کل یکم ستمبر کونوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن ریٹائرڈ صفدرکی سزا کےخلاف خصوصی اپیلوں پر 22 ماہ کےبعد سماعت کرے گا۔ ایون فیلڈ ریفرنس میں اپیلوں پرآخری سماعت 19 ستمبر 2018ء کوہوئی تھی، ریفرنس میں سزا معطلی کےبعد سےسابق وزیراعظم اورمسلم لیگ نون کےقائد میاں نوازشریف،ان کی بیٹی مریم نوازاورداماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدرضمانت پرہیں۔

نوازشریف نےالعزیزیہ اسٹیل ملزمیں سزا کےخلاف اپیل کررکھی ہےجبکہ نیب نےبھی العزیزیہ کیس میں نوازشریف کی سزا بڑھانےکی اپیل کررکھی ہے۔ احتساب عدالت نےفلیگ شپ ریفرنس میں نوازشریف کوبری کردیا تھا، نیب نےفلیگ شپ ریفرنس میں نوازشریف کی بریت کے خلاف اپیل کررکھی ہے۔ ایون فیلڈریفرنس میں احتساب عدالت نےنوازشریف کو 10سال قید کی سزا،مریم نوازکو 7 سال اورکیپٹن ریٹائرڈ صفدر کوایک سال قیدسنائی گئی تھی۔ اسلام آبادہائیکورٹ نےایون فیلڈ کیس میں نوازشریف،مریم،کیپٹن صفدرکی سزائیں معطل کردی تھیں،جبکہ سپریم کورٹ نےبھی ایون فیلڈ کیس میں نوازشریف،مریم نواز،کیپٹن ریٹائرڈ صفدرکی سزائیں معطل رکھنےکا فیصلہ برقراررکھا تھا۔

متعلقہ خبریں