پاکستان

عوام نے دفعہ 144 کی دھجیاں بکھیر دیں، حب ڈیم کے سپیل ویز پکنک پوائنٹ میں تبدیل

کراچی اور ڈیم کے اطراف بلوچستان کے نواحی علاقوں سے روزانہ سینکڑوں افراد پکنک منانے حب ڈیم پہنچ رہے ہیں

حب ڈیم مکمل طور پر بھرنے کے بعد اسپل ویز سے اضافی پانی کا اخراج جاری جبکہ عوام نے دفعہ 144 کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے حب ڈیم کے سپیل ویز کو پکنک پوائنٹ میں تبدیل کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق یہ پانی حب ندی کے راستے سمندر میں شامل ہورہا ہے جبکہ ڈپٹی کمشنر لسبیلہ حسن وقار چیمہ نے حب ڈیم یا اس کے اسپل وے تک عام اور غیر متعلقہ شہریوں کی آمدورفت روکنے کیلئے دفعہ 144 نافذ کررکھی ہے۔ اس کے باوجود شہریوں نے حب ڈیم اور اسپل ویز کو پکنک پوائنٹ بنالیا ہے۔ واپڈا ذرائع کے مطابق کراچی اور ڈیم کے اطراف بلوچستان کے نواحی علاقوں سے روزانہ سینکڑوں افراد پکنک منانے حب ڈیم پہنچ رہے ہیں اور اسپل ویز پر دن بھر میلہ لگا رہتا ہے۔

واپڈا ذرائع کے مطابق ضلعی انتظامیہ کی جانب سے دفعہ 144 کی پابندی پر عمل درآمد نہیں ہورہا جس کی وجہ سے سیکڑوں لوگ صرف اسپل ویز کے نیچے ہی نہا نہیں رہے بلکہ اسپل وے کی دیوار پر بیٹھے اور حب ڈیم کے اندر بھی غوطے لگاتے نظر آرہے ہیں۔ واپڈا ذرائع کے مطابق اسپل ویز کو نقصان پہنچنے کی صورت میں یک دم 10 لاکھ کیوسک پانی کا اخراج ہوسکتا ہے اور خدانخواستہ کوئی گڑبڑ ہوئی تو سیلابی صورتحال سے حب ڈیم سے گڈانی تک کی آبادی کا صفایا ہوجائے گا۔

ذرائع کے مطابق واپڈا کی سکیورٹی سینکڑوں لوگوں کو حب ڈیم آنے سے روکنے کیلئے ناکافی ہے۔ ذرائع کے مطابق مقامی لوگ ڈیم پر پکنک منانے والوں کے سہولت کا ربنے ہوئے ہیں، ان کی مدد اور تعلقات کی بنا پر لوگ عام راستے کی بجائے نچلے راستوں سے حب ڈیم یا اسپل وے تک پہنچ جاتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق آج بلوچستان پولیس اور لیویز نے ڈیم کا کنٹرول سنبھا لیا ہے اور واپڈ ذرائع کے مطابق مقامی شہریوں کی جانب سے حب ڈیم پر پکنک کی پابندی پر عملدرآمد کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

Back to top button