پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وزیراعظم عمران خان کے حالیہ بیانات کے ملک گیر اثرات‘ پیپلز پارٹی نے پاک فوج سے وضاحت مانگ لی، ناقابل یقین خبر

وزیراعظم کی افواج پاکستان کے حوالے سے ابہام پیدا کرنے کی پالیسی کو مسترد کرتے ہیں: نیئر بخاری

وزیراعظم عمران خان کے حالیہ بیانات کے ملک گیر اثرات پڑ رہے ہیں جس کے بعد پیپلز پارٹی نے پاک فوج سے وضاحت مانگ لی ہے جو ناقابل یقین خبر ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیپلزپارٹی نے آئی ایس پی آر سے وزیراعظم کے بیان پر وضاحت دینے کا مطالبہ کر دیا ہے۔پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما نیئر بخاری نے کہا ہے کہ وزیراعظم کی افواج پاکستان کے حوالے سے ابہام پیدا کرنے کی پالیسی کو مسترد کرتے ہیں،آئی ایس پی آر کو وزیراعظم کے بیانات پر وضاحت جاری کرنی چاہئے۔افواج پاکستان قومی سلامتی اور سرحدوں کی حفاظت کی ذمہ دار اور ہنگامی صورت حال میں مددگار ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ایک دن کہتے ہیں افواج پاکستان سے کوئی تنازعہ نہیں ہے،اگلے دن کہتے ہیں حکومت کو فوج کااعتماد حاصل ہے،حکومتیں عوامی اعتماد کی مرہون منت ہوتی ہیں نہ کہ بیساکھیوں کے سہاروں کی،وزیراعظم پارٹی اور اتحادیوں کا اعتماد کھو چکے ہیں۔دوسری جانب پیپلزپارٹی کی رہنما نفیسہ شاہ نے وزیراعظم کے معاون خصوصی کے استعفے کے معاملے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوے کہا ہے کہ استعفیٰ قبول نہ کرنا مضحکہ خیز ہے۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ تبدیلی اور انصاف کا نعرہ لگانے والی سلیکٹیڈ حکومت بے نقاب ہو چکی ہے، انہوں نے کہا ثابت ہوگیا کہ سلیکٹیڈ وزیراعظم مافیا اور عوام کی جیبوں پر ڈاکے ڈالنے والوں کی سرپرستی کر رہے ہیں، انہوں نے کہا وزیراعظم کو فوری عاصم سلیم باجوہ کا استعفی قبول کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا وزیراعظم کے معاون خصوصی کی وضاحت اپنی جگہ لیکن معاملے کی آزادانہ تحقیقات بھی ناگزیر ہے،۔ انہوں نے کہا سلیکٹیڈ وزیراعظم کی کابینہ مسلسل اسکینڈلز کی زد میں ہے۔ انہوں نے کہا عاصم سلیم باجوہ کی شخصیت اب متنازعہ بن چکی ہے، معاون خصوصی کی حیثیت سے استعفی دیا گیا تو سی پیک اتھارٹی کی چیئرمین شپ سے کیوں نہیں۔ نفیسہ شاہ نے کہا اس سے قبل تانیہ ایدروس اور ظفر مرزا سے استعفے لئے گئے لیکن حقائق پر پردہ ڈال دیا گیا۔ انہوں نے کہا۔آٹا چینی، ادویات، ماسک، پٹرول سمیت دیگر ذمہ داران کے خلاف کارروائی کی بجائے انہیں ملک سے فرار کروایا گیا۔ نفیسہ شاہ نے کہا سلیکٹیڈ وزیراعظم کی کابینہ میں بیٹھے لوگ اب مشکوک بن چکے ہیں،۔ انہوں نے کہا سلیکٹیڈ کابینہ میں بیٹھے تمام لوگوں کے اثاثوں کی تفصیلات سامنے لائی جائیں۔ انہوں نے کہا پیپلزپارٹی سلیکٹیڈ وزیراعظم کا سلیکٹیڈ احتساب مسترد کرتی ہے۔

Back to top button