پاکستان

زرداری،گیلانی پرفردجرم عائد،نوازشریف اشتہاری ہوگئے

عدالت نےتوشہ خانہ ریفرنس میں نوازشریف کواشتہاری قراردے دیا جب کہ سابق صدراورسابق وزیراعظم پرفرد جرم عائد کردی

احتساب عدالت نےتوشہ خانہ ریفرنس میں نوازشریف کواشتہاری قراردے دیا جب کہ سابق صدرآصف علی زرداری اورسابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی پرفرد جرم عائد کردی۔ سابق صدرآصف علی زرداری اورسابق وزرائےاعظم نوازشریف اوریوسف رضا گیلانی کےخلاف توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت راولپنڈی میں ہوئی۔ نوازشریف اورآصف زرداری پرتوشہ خانہ سےتحائف میں ملی گاڑیاں ذاتی استعمال میں لینےجب کہ یوسف رضا گیلانی پرگاڑیاں دینےکی سمری منظورکرنےکا الزام ہے۔ دوران سماعت احتساب عدالت کےجج اعظم خان نےکہا کہ آصف علی زرداری اوریوسف رضا گیلانی پرفرد جرم عائد کرتےہیں۔ جج اعظم خان نےآصف زرداری کےوکیل فاروق ایچ نائیک سےمکالمہ کرتےہوئےکہا کہ آپ نےچارج شیٹ پڑھنی ہےتوپڑھ لیں۔

عدالت نےاستفسارکیا کہ کیا ملزمان صحت جرم سےانکارکررہےہیں؟ جس پربتایا گیا کہ آصف زرداری اوریوسف رضا گیلانی نےصحت جرم سےانکارکردیا ہے۔ یوسف رضا گیلانی کےوکیل نےکہا کہ وزیراعظم کےپاس اختیارہوتا ہےکہ سمری کی منظوری دے، نیب نےاختیارات کے غلط استعمال کا غلط ریفرنس بنایا۔ بعدازاں یوسف رضا گیلانی خود روسٹرم پرآ گئےاورمؤقف اپنایا کہ میں نےکبھی رولزکےخلاف کوئی کام نہیں کیا، قانون کےمطابق جوسمری آئی اسےمنظورکیا، اگرسمری غلط ہوتی توسمری مووہی نہ ہوتی۔

احتساب عدالت نےتوشہ خانہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کواشتہاری قراردیتےہوئےان کےدائمی وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیےاور 7 روزمیں نوازشریف کی پراپرٹی کی تفصیلات طلب کرلیں۔ توشہ خانہ ریفرنس میں عبدالغنی مجید،انورمجید پربھی فرد جرم عائد کی گئی، تاہم دونوں ملزمان نےبھی صحت جرم سےانکار کردیا۔ توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت 24 ستمبر تک ملتوی کردی گئی۔

 

 

 

 

Back to top button