پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وزیراعظم عمران خان پولیس افسر کےہاتھوں یرغمال بن گئے

وزیراعظم عمران خان پولیس افسر کےہاتھوں یرغمال بن گئے،عارف حمید بھٹی نےعمرشیخ کی شرمناک حرکتوں کی نشاندہی کردی 

وزیراعظم عمران خان پولیس افسرکےہاتھوں یرغمال بن گئے،عارف حمید بھٹی نےعمرشیخ کی شرمناک حرکتوں کی نشاندہی کردی سینئر صحافی عارف حمید  بھٹی نے دعویٰ کیا ہے کہ سی سی پی او لاہورعمرشیخ آئی جی آفس سےنکلےتوانہوں نے وہاں باہرموجود ایک کانسٹیبل "اردلی” کو ہاتھوں سے گندے اشارے کیے اور گالیاں دے کرکہا کہ ”اوئے تواڈے آئی جی نے نہیں لایا مینوں ، مینوں اُتے پی ایم نے لایا ، تے میں جو مرضی کراں” (آپ کے آئی جی  نے مجھے تعینات نہیں کیا، مجھے وزیراعظم نے تعینات کیا، میں جو کچھ کروں، میری مرضی)اس سے بھی غلیظ لفظ استعمال کیے گئے۔

عارف حمید بھٹی نے مزید بتایا کہ گزشتہ رات ان کا ایک جرم ان کے پاس آیا تھا ، میں نے تینوں افسران سے کہا کہ اس واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج دیں جس میں سی سی پی او کو ہاتھوں سے اشارے کرتا دیکھا جاسکے ، اس پر میزبان عمران خان نے استفسار کیا کہ  سی سی پی او آئی جی آفس سے نکلے تو کانسٹیبل کے سامنے ہاتھوں سے گندے اشارے کیے ؟ فوٹیج گواہ ہے ؟ جس پر بات جاری رکھتے ہوئے عارف حمید بھٹی کا کہناتھا کہ  مجھے وزیراعظم نے لگایا ہے ،  میرا جو کرنا ہے کرلے ۔ عمران خان کاکہناتھاکہ پھر تو آئی جی نے ردعمل دینا تھا جس پر عارف حمید نے کہا کہ آئی جی کو ری ایکٹ کروایا گیا، کیونکہ انہوں نے انعام غنی کو لگوانا تھا، سکرپٹ یہ تھا کہ عمر شیخ صاحب کو سی سی پی او لاہور لگوایا جائے گا، حالات ایسے بدتمیز کیے جائیں گے کہ آئی جی چھوڑ کر چلا جائے گا اور انعام غنی فوری طورپرآجائیں گے۔

Back to top button