پاکستان

نوازشریف کی ضمانت منسوخی ,نیب درخواست واپس

نیب نے کہا کہ نوازشریف نے سزا معطلی کے بعد ضمانت کی رعائت کا غلط استعمال کیا

اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرارآفس نےسابق وزیراعظم نوازشریف کی ایون فیلڈ ریفرنس میں ضمانت منسوخی کی نیب درخواست پر اعتراضات لگاکرواپس کردی۔  اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار آفس نے مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کی ضمانت منسوخ کرنے کی نیب درخواست پر اعتراض عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس میں کچھ تکنیکی خامیاں ہیں، درخواست کے ساتھ جمع کرائی گئی بعض دستاویزات غیر واضح اور بعض کی ترتیب درست نہیں، رجسٹرار آفس نے نیب کو درخواست واپس کرتے ہوئی تکنیکی خامیاں دور کرنے کی ہدایت کردی۔

نیب نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں جمع کرائی گئی درخواست میں نوازشریف، سیکرٹری داخلہ اورسیکرٹری خارجہ کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے 9 ستمبر 2018 کو نوازشریف کی سزا معطل کرکے ضمانت منظور کی تھی جس کے خلاف اپیل زیر سماعت ہے۔

نیب نے کہا کہ نوازشریف نے سزا معطلی کے بعد ضمانت کی رعائت کا غلط استعمال کیا اور بیرون ملک جا کر مفرور ہو گئے لہذا ان کی ضمانت ختم کی جائے، گرفتار کرنے کی اجازت دی جائے اور سیکرٹری داخلہ و سیکرٹری خارجہ کو قانون کے مطابق ذمہ داریاں ادا کرنے کا حکم دیا جائے تاکہ نواز شریف واپس آ کر اپنی قید کی سزا کاٹ سکیں۔

Back to top button