پاکستانفیچرڈ پوسٹ

اسامہ بن لاندن نےامریکا کےورلڈ ٹریڈ سینٹرپرحملہ کیوں کیا؟

اسامہ بن لاندن نےامریکا کےورلڈ ٹریڈ سینٹرپرحملہ کیوں کیا؟،صحافی سلیم صافی نے ناقابل یقین حقائق کھول کررکھ دئے

اسامہ بن لاندن نےامریکا کےورلڈ ٹریڈ سینٹرپرحملہ کیوں کیا؟،صحافی سلیم صافی نے ناقابل یقین حقائق کھول کررکھ دئے، نیویارک کے ٹوئن ٹاورز اور پینٹاگان سے جہازوں کے ٹکرائے جانے کے واقعے کو آج انیس سال ہو گئے۔ تب افغانستان کے حکمران اور طالبان کے امیرالمومنین ملا محمد عمر کو اندازہ نہیں تھا کہ القاعدہ کیا کرنے جارہی ہے لیکن اسامہ بن لادن اوران کے قریبی ساتھی جانتے تھے کہ اس کے بعد نہ صرف امریکہ افغانستان میں آئے گا بلکہ پوری دنیا بدل جائے گی۔

احمد یحییٰ گدان جو اس وقت القاعدہ کے آڈیو وڈیو سیکشن کے انچارج تھے، نے ایک وڈیو میں واضح کیا کہ اسامہ بن لادن نے تفصیلات چھپا رکھی تھیں لیکن نائن الیون سے کچھ عرصہ قبل اپنے ساتھیوں کو قندھار میں جمع کرکے بتایا تھا کہ وہ امریکہ کے خلاف ایک ایسی کارروائی کرنے والے ہیں کہ اس کے بعد وہ ضرور افغانستان پر حملہ آور ہوگا۔ جیسا کہ اسامہ بن لادن نے سوچا تھا، ویسا ہی ہوا۔ نائن الیون کے واقعات نے پوری دنیا یوں بدل دی لیکن سب سے زیادہ متاثر افغانستان اور پاکستان ہوئے۔

امریکہ، پاکستان سے دور جاکر بھارت کا اسٹرٹیجک اتحادی بننے والا تھا لیکن نائن الیون کی وجہ سے امریکہ کو ایک بار پھر کچھ وقت کے لئے پاکستان سے رجوع کرنا پڑا تاہم اس کا فائدہ پاکستان کو نہیں بلکہ پرویز مشرف کی ذات کو ہوا، اُن کا اقتدار طویل ہو گیا۔ دوسرا نقصان پاکستان کو دہشت گردی کی صورت میں ہوا جس کے نتیجے میں ستر ہزار سے زائد پاکستانی لقمہ اجل بنے۔ جنرل مشرف نے امریکہ کا ساتھ دے کر پاکستان کے اندر جہادیوں اور القاعدہ جیسی تنظیموں کو برہم کیا لیکن دوسری طرف امریکہ اور افغان حکومت کا اعتماد بھی پوری طرح حاصل نہ کرسکے۔

Back to top button